”قرآن و حدیث کی روشنی میں ہمارا یہ مطالبہ جائز تھا لیکن ۔۔۔“زینب قتل کیس کا فیصلہ آنے کے بعد اہل خانہ نے حکومت کے خلاف ایسی بات کر دی کہ شہباز شریف کے بھی ہو ش اڑ جائیں گے

”قرآن و حدیث کی روشنی میں ہمارا یہ مطالبہ جائز تھا لیکن ۔۔۔“زینب قتل کیس کا ...
”قرآن و حدیث کی روشنی میں ہمارا یہ مطالبہ جائز تھا لیکن ۔۔۔“زینب قتل کیس کا فیصلہ آنے کے بعد اہل خانہ نے حکومت کے خلاف ایسی بات کر دی کہ شہباز شریف کے بھی ہو ش اڑ جائیں گے

  


قصور (ڈیلی پاکستان آن لائن )مقتول زینب کے چچا نے کہا ہے کہ حکومت سے آئین میں ترمیم کر کے عمران کو سر عام پھانسی دینے کا مطالبہ کیا تھا جو پورا نہیں ہو سکا ۔زینب قتل کیس کا فیصلہ آنے کے بعد قصور میں میڈ یا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عدالتی فیصلے سے مطمئن ہیں لیکن حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ قاتل عمران کو سرعام پھانسی دی جائے تا کہ آئندہ ایسے جرائم نہ ہوں ۔ان کا کہنا تھا کہ حکومت سے آئین میں ترمیم کر کے سرعام پھانسی دینے کا مطالبہ جائز تھا ،قرآن و حدیث کی روشنی میں بھی یہ مطالبہ جائز تھا تاکہ آنے والے وقتوں میں کوئی ایسی درندگی نہ کر سکتا ۔اس موقع پر موجود زینب کی والدہ نے کہا کہ عمران کو سرعام پھانسی دی جائے ،جہاں سے زینب کی لاش ملی اسی جگہ پر عمران کو پھانسی دی جائے ۔زینب کے بھائی ابوذر نے کہا کہ خوشی ہے زینب کے قاتل کو سزا سنا دی گئی ،عمران کو سر عام پھانسی دی جائے ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /قصور


loading...