’جب ٹرمپ کی بیوی نے ان کے بچے کو جنم دیا تو وہ میرے ساتھ۔۔۔‘ فحش ماڈل نے امریکی صدر کا سب سے شرمناک راز بے نقاب کردیا، پوری دنیا کے سامنے شرم سے پانی پانی کردیا

’جب ٹرمپ کی بیوی نے ان کے بچے کو جنم دیا تو وہ میرے ساتھ۔۔۔‘ فحش ماڈل نے ...
’جب ٹرمپ کی بیوی نے ان کے بچے کو جنم دیا تو وہ میرے ساتھ۔۔۔‘ فحش ماڈل نے امریکی صدر کا سب سے شرمناک راز بے نقاب کردیا، پوری دنیا کے سامنے شرم سے پانی پانی کردیا

  


واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈٹرمپ پر جنسی تعلقات کے الزامات عائد کرنے والی ماڈلز اور اداکاراؤں کی فہرست طویل تر ہوتی جا رہی ہے۔ اب ایک اور ماڈل ایسے سنگین الزام کے ساتھ سامنے آ گئی ہے کہ لوگ سابق الزامات کو بھول جائیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق یہ ماڈل فحش فوٹوشوٹ کرانے والی کیرن مک ڈوگل ہے جس نے انکشاف کیا ہے کہ ’’جب ڈونلڈٹرمپ کی اہلیہ میلانیا نے ان کے بیٹے ’بیرن‘ کو جنم دیا اس وقت ٹرمپ کے میرے ساتھ جنسی تعلقات تھے۔ ہم پہلی بار2006ء میں پلے بوائے مینشن پارٹی میں ملے تھے اور دیکھتے ہی ٹرمپ مجھ پر فریفتہ ہو گئے اور ہم دونوں کے درمیان دوستی ہو گئی۔پہلی بار جب ہم نے جنسی تعلق قائم کیا تو ٹرمپ نے مجھے اس کے عوض رقم بھی دینے کی کوشش کی تاہم میں نے رقم نہیں لی۔ اس کے بعد ہم متعدد بار ملے۔ ہماری زیادہ تر ملاقاتیں بیورلے ہلز ہوٹل میں ہوئیں۔‘‘

کیرن کا کہنا تھا کہ ’’پلے بوائے مینشن پارٹی میں ٹرمپ اس قدر میرے گرد گھومتے رہے کہ وہاں موجود ہر ایک نے ان کی نیت بھانپ لی۔ پارٹی کے بعد پلے بوائے میگزین کے مارکیٹنگ ایگزیکٹو نے مجھے کہا تھا کہ ’وہ تم پر دل ہار بیٹھا ہے، میرے خیال تم اس کی اگلی بیوی بنو گی۔‘پہلی بار جب ٹرمپ نے مجھے بیورلے ہلزہوٹل کے ایک نجی بنگلے میں ڈنر پر بلایا اس وقت ان کی اہلیہ میلانیا نیویارک میں موجود تھی اور اس کی گود میں تین ماہ کا بیرن تھا۔ جب جنسی تعلق استوار کرنے کے بعد اس نے مجھے رقم دینے کی کوشش کی تو میں نے دکھ کے ساتھ اس کی طرف دیکھااور کہا ’نو تھینکس،میں اس طرح کی لڑکی نہیں ہوں، میں نے تمہارے ساتھ جنسی تعلق اس لیے قائم کیا ہے کہ کیونکہ میں تمہیں پسند کرتی ہوں، میں نے رقم کے لیے یہ نہیں کیا۔‘ جواب میں ٹرمپ نے کہا کہ ’تم بہت خاص ہو۔‘‘ 

کیرن نے مزید بتایا کہ ’’ہمارا تعلق 10ماہ تک رہا۔ ہمارے رشتے میں اس وقت تلخی آنی شروع ہوئی جب ٹرمپ نے میرے ایک سیاہ فام دوست پر نسل پرستانہ تنقید شروع کر دی اور مجھے اس سے دور رہنے کی ہدایت کرنے لگے۔ مجھے ان کی یہ باتیں بہت ناگوار گزریں چنانچہ میں نے اپریل 2007ء میں ان کے ساتھ تعلق ختم کر لیا۔اس تعلق کے ختم ہونے کے 10سال بعد جب ٹرمپ صدارتی الیکشن کی مہم چلا رہے تھے، انہوں نے اپنے قریبی دوست ڈیوڈ پیکر کی میڈیا کمپنی اے ایم آئی کے ذریعے مجھے ڈیڑھ لاکھ ڈالر(تقریباً ڈیڑھ کروڑ روپے) کی پیشکش کی تاکہ میں اس تعلق کے بارے میں زبان نہ کھولوں۔‘‘صدر ٹرمپ کی طرف سے باقی الزامات کی طرح اس کی بھی سختی سے تردید کی گئی ہے۔ ان کے ترجمان نے کہا ہے کہ ’’صدر ٹرمپ کا کیرن کے ساتھ کبھی تعلق نہیں رہا۔ ایسی تمام خبریں بے بنیاد اور من گھڑت ہیں۔‘‘

مزید : بین الاقوامی /ڈیلی بائیٹس


loading...