بھارت میں گھوڑی چڑھے فوجی اہلکار دولہا پر تشدد، باراتیوں کے ساتھ ایسی شرمناک حرکت کی کہ سن کرآپ کو بھی دکھ ہوگا

بھارت میں گھوڑی چڑھے فوجی اہلکار دولہا پر تشدد، باراتیوں کے ساتھ ایسی شرمناک ...
بھارت میں گھوڑی چڑھے فوجی اہلکار دولہا پر تشدد، باراتیوں کے ساتھ ایسی شرمناک حرکت کی کہ سن کرآپ کو بھی دکھ ہوگا

  



نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن)ایک دلت کو دولہا بن کر گھوڑے پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں،بھارت میں ایک دلت فوجی اہلکارکو بھری بارات میں ہی بدترین تشدد کا نشانہ بنا دیا گیا۔نہ صرف یہ بلکہ انتہائی شرمناک حرکت کرتے ہوئے بارات میں شامل لوگوں پر پتھراو بھی شروع کردیا جس سے متعدد خواتین زخمی ہوگئیں۔

بھارتی اخبار ٹائمز آف انڈیا کے مطابق بھارتی ریاست گجرات کے شہر پالن پور میں نسل پرستی کا ایک افسوسناک واقعہ پیش آیا ہے جہاں کچھ انتہا پسندوں نے دلت کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے آکاش کوٹیانامی نوجوان کو خبردار کیا کہ شادی پر صرف ’اونچی‘ ذات سے تعلق رکھنے والا ہی گھوڑے پر دلہن لینے جاسکتا ہے ’نچلی‘ذات والوں کو کوئی حق نہیں ہے ، تاہم شادی کی خوشی میں متاثرہ شخص نے پرواہ نہ کی اور شادی والے دن گھوڑے پر بیٹھا ابھی گھر سے نکلا ہی تھا کہ انتہا پسند جتھا وہا ں پہنچ گیا جس نے اسے گھوڑے سے گھسیٹتے ہوئے نیچے گرا دیا اور بری طرح مارا پیٹا، صرف یہی نہیں بلکہ باراتیوں پر پتھر بھی برسائے جن سے کئی خواتین زخمی ہوگئیں۔

اطلاعات کے مطابق تشدد کا نشانہ بننے والا دولہا بھارتی فوج میں ملازم ہے۔

دلتوں کے حقوق کیلئے کام کرنے والی ایک تنظیم پولیس میں ایف آئی آر درج کروائی ہے جس کے بعد پولیس ایکشن میں آئی اور اب تک گیارہ افراد کو گرفتارکرلیاگیاہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی