مناواں ، مظفرآباد کے رہائشی درزی کو کام کے دوران تلخ کلامی پر قتل کر دیا گیا

مناواں ، مظفرآباد کے رہائشی درزی کو کام کے دوران تلخ کلامی پر قتل کر دیا گیا
مناواں ، مظفرآباد کے رہائشی درزی کو کام کے دوران تلخ کلامی پر قتل کر دیا گیا

  


لاہور(بلال چودھری)مناواں کے علاقہ میں معمولی تلخ کلامی پر مخالف نے فائرنگ کر کے 26سالہ نوجوان کو قتل کر دیا اور موقع سے فرار ہو گیا۔پولیس نے مقتول کی نعش کو مردہ خانہ میں جمع کروا کے ملزم کی تلاش شروع کر دی ہے ۔تفصیلات کے مطابق 26سالہ سید شفاعت گیلانی لکھوڈیر گاؤں نزد مسجد مدینہ میں اپنے بھائیوں کے ساتھ رہتا تھا اور مظفر آباد آزاد کشمیر سے لاہور روزی کمانے آیا تھا یہاں گاؤں میں وہ درزی کا کام کرتا تھا اور چند ماہ کے بعد ہی اس کی شادی تھی۔نمائندہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے مقتول کے بھائی کفایت حسین ،شیراز حسین گیلانی ،بہنوئی سید طاہر حسین شاہ دوست محمد شبیر اور عاقب علی نے بتایا کہ سید شفاعیت گیلانی نہایت شریف النفس انسان تھا اور 8سال سے لکھوڈیر گاؤں میں درزی کا کام کر رہا تھا

۔چند روز قبل اس کی محلہ دار محمد ظفر سے معمولی تلخ کلامی ہوئی تھی لیکن اہل علاقہ نے ان کی صلح کروا دی تھی۔گزشتہ روز جب شفاعیت گیلانی رات 8بجے کے قریب اپنی دکان سے کھانا کھانے گھر آ رہا تھا تو گلی میں ظفر نے اس پر فائرنگ کر دی اور موقع سے فرار ہو گیا ۔علاقہ مکینوں نے انہیں اطلاع دی اور ریسکیو 1122کو اطلاع دی جنہوں نے زخمی کو سروسز ہسپتال

میں منتقل کیا جہاں اس نے بیان دیا کہ اس پر ظفر نے فائرنگ کی ہے کئی گھنٹے تک زندگی اور موت کی کشمکش میں رہنے کے بعد وہ زندگی کی بازی ہار گیا پولیس نے جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کر کے مقتول کی نعش کو پوسٹ مارٹم کے لیے میو ہسپتال کے مردہ خانہ میں جمع کروا دیا ہے اور واقعہ کا مقدمہ 35/15 دفعہ 302/324 کے تحت درج کر کے ملزم کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔

مزید : علاقائی


loading...