پشاور سانحہ افسوسناک ،اپواءکالج کی سیکیورٹی سخت کر دی ہے ،روحی سید

پشاور سانحہ افسوسناک ،اپواءکالج کی سیکیورٹی سخت کر دی ہے ،روحی سید

                               لاہور(سروے رپورٹ :دیبا مرزا) اپواءیوتھ کالج برائے خواتین سے اب تک ہزاروں خواتین استفادہ حاصل کر چکی ہیں، اپواءکے زیر انتظام اس وقت 24 مراکز، 13سکول، 8ہیلتھ سنٹر، 4ہاسٹل کام کر رہے ہیں کالج میں اس وقت 3 ہزار سے زائد طالبات تعلیم حاصل کر رہی ہیں جن کو ہینڈی کرافٹ، سلائی کڑھائی، بیوٹیشن، کولنگ اور دیگر تمام ہنر سکھائے جاتے ہیں اس کےساتھ ساتھ اپواءنے انفرادی طور پر خواتین کو سول سوسائٹی میں متحرک کیا ۔ پشاور سانحہ سے ہم سب کو دلی صد مہ پہنچا ہے ،موجودہ ملکی صورتحال کے پیش نظر کالج کی سیکیورٹی کو سخت کر دیا گیا ہے اپواءکالج کی چیئرپرسن روحی سید نے پاکستان سے گفتگو کر تے ہو ئے بتایا کہ اپواءکالج انفرادی طور پر خواتین کی صلاحیتوں کو اجاگر کرنے اور تعلیمی دولت سے مالا مال کرنے کا واحد فعال ادارہ ہے اپواءیوتھ کالج پرائیویٹ طور پر کام کرنےوالا واحد ادارہ ہے جو کہ ملک میں ڈسٹرکٹ سے بیشتر اضلاع میں اپنی خدمات سر انجام دے رہا ہے، طالبات کو تعلیم کےساتھ ساتھ ہر طرح کے مسئلے سے نمٹنے کےلئے آگاہی اور لیگل میٹرز کے بارے میں بھی معلومات دی جاتی ہیں، اپنے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے روحی سید نے بتایا کہ وہ 35سال سے اپواءکے ساتھ منسلک ہیں جتنا سکون یہاں پر بچیوں کی زندگی سنوارنے میں ملتا ہے اتنا اور کہیں نہیں ملتا ۔ اپواءیوتھ ویمن ایسوسی ایشن کی تاریخ کے بارے میں بات کر تے ہوئے انہوں نے بتا یا کہ اس کا قیام 1949ءکو بیگم رعنا لیاقت خان کے ذریعے عمل میں آیا اور اس کی تحریک اور رہنمائی کا فریضہ مادر ملت محترمہ فاطمہ جناح جیسی اہم شخصیات نے سر انجام دیا اس تنظیم نے خواتین کی بہبود کےلئے قابل ذکر کام کیا ان دنوں یہ تنظیم ایک مشاورتی ادارے کی حیثیت سے حکومت پاکستان کےساتھ اور کیٹگری بی کے ادارے کی حیثیت سے اقوام متحدہ، اکنامک سوشل کونسل کے ساتھ منسلک ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...