لوڈشیڈنگ کے ساتھ پٹرولیم مصنوعات کی قلت حکومت کےلئے باعث شرم ہے، نعیم میر

لوڈشیڈنگ کے ساتھ پٹرولیم مصنوعات کی قلت حکومت کےلئے باعث شرم ہے، نعیم میر

لاہور (وقائع نگار)آل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی سیکرٹری جنرل نعیم میر نے حکومت کی لاپرواہی اور ناقص کارکردگی پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایسے وقت میں جب عوام اٹھارہ گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ اور گیس کی قلت سے دوچار ہے پیٹرولیم مصنوعات کی شدید قلت باعث شرم ہے انہوںنے کہا کہ ایک طرف تو عوام پیٹرول کے حصول کےلئے قطاروں میں کھڑے ہیں تو دوسری طرف وزیر اعظم، وفاقی وزیر اور وزیر خزانہ غیر ملکی دوروں میں مصروف ہیں مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے بد انتظامی کے سارے ریکارڈ توڑدیے ہیں جیسا کہ پنجاب میں ایل پی جی کی قیمتیں آسمان کی بلندیوں کو چھورہی ہیں اور 11.8 کلو گرام گیس سلنڈر کی قیمت 2,200 روپے تک پہنچ گئی ہے جبکہ گھر یلو صارفین کے استعمال کے لیے بھی گیس کی سپلائی نہ ہو نے کی برابر ہے ایسی نالائق اور نکمی حکومت کو مستعفی ہو جانا چاہیے اور تمام نظم و نسق افواج پاکستان کو سونپ دینا چاہیے کیونکہ حکومت انتظامی طور پر بری طرح فیل ہو چکی ہے جب عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں 50% کمی کی گئی مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے 25% تک تیل کی قیمتیں کم کیں اور اب مافیا آزادی کے ساتھ اسے بلیک مارکیٹ میں پیچ رہا ہے اور کوئی پوچھنے والا نہیں۔

انھوں نے کہا کہ بجلی کے بلوں کی بحالی اور 262 بلین روپے کے سرکلر قرض میں ناکامی کے بعد اب حکومت نے PSO کو چھے مقامی بینکوں میں 50 بلین روپے کا قرض دار ظاہر کر کے پیٹرول کی دارآمد کی 110 بلین روپے کی L/Cs کو روک دیا ہے جس کی وجہ سے پنجاب میں پیٹرولیم مصنوعات کی شدید قلت ہو گئی ہے۔مسلم لیگ (ن) کی حکومت میں پہلی دفعہ یہ ہوا ہے کہ PSO کی پیٹرولیم مصنوعات کی درآمد کو سپلائرز نے رد کیا ہے۔یہی وجہ ہے کہ PSO اور دوسرے OMCs نے پیٹرولیم مصنوعات کی فراہمی50%تک کم کر دی ہے۔انھوں نے کہا کہ پنجاب میں پہلے ہی ٹرانسپورٹیشن کے لیے CNG کی فراہمی نہ ہونے کے برابر تھی اور اب پیٹرول کی شدید قلت مزید مشکلات سے دوچارکر رہی ہے اسی لیے پیٹرول پمپس پر گاڑیوں کی لمبی قطاریں نظرآتی ہیں۔ PSO نے بہت پہلے ہی حکومت کو پہلے ہی اپنے مالی حالات سے آگاہ کر دیا تھا لیکن حکومت کی ناقص حکمت عملی سے حالات خراب ہو ئے ہیں۔ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے موقع سے فائد ہ اٹھاتے ہوئے بجلی کی پیداوارکو بڑھایا جا سکتا تھا لیکن حکومت کی نااہلی اور ناقص منصوبہ بندی سے کاروبار تباہی کے دوراہے پر کھڑے ہیں۔تھرمل پاور جنریشن میں استعمال ہونے والے فرنس آئل کا سٹاک ختم ہونے والا ہے اور PSO کے مالی حالات کی وجہ سے اب مزید آئل درآمد بھی نہیں کیا جا سکتا۔ تیل کی قیمتوں میں کمی نے صنعتی پیداوار اور علاقائی معیشت پر اچھا اثر ڈالا جبکہ مسلم لیگ (ن) کی ناقص منصوبی بندی کی وجہ سے مینوفیکچرنگ انڈسٹری یہاں بھی بد حالی کا شکار ہوئی ہے ۔ انھوں نے مزیدکہا کہ ملکی حالات تب تک ٹھیک نہیں ہوں گے جب تک حکومت ان لوگوں کا سزا نہیں دے گی جو ان حالات کے ذمہ دار ہیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...