قومی اسمبلی، ہنگامہ آرائی کے باوجود گیس انفراسٹرکچر ڈیویلپمنٹ آرڈیننس منظور

قومی اسمبلی، ہنگامہ آرائی کے باوجود گیس انفراسٹرکچر ڈیویلپمنٹ آرڈیننس منظور

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی اسمبلی نے صوبوں اوراپوزیشن کی مخالفت کے باوجود گیس انفراسٹرکچر ڈیویلپمنٹ آرڈیننس منظورکرلیاجس پر اپوزیشن نے شدید نعرہ بازی کی اور واک آؤٹ کردیا۔ سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی زیرصدار ت ہونیوالے اجلاس میں حکومت نے بائیس جنوری 2015ء کو ختم ہونیوالے گیس انفراسٹرکچر ڈیویلپمنٹ آرڈیننس میں توسیع کا بل پیش کیا جس پر اپوزیشن جماعتوں نے احتجاج شروع کردیالیکن اِسی دوران بل میں مزید 120دن توسیع کی منظوری دیدی گئی ۔ اپوزیشن نے احتجاج کرتے ہوئے آرڈیننس کی کاپیاں پھاڑ دیں اور سپیکر کی ڈائس کا گھیراؤ کرکے نعرہ بازی کی ، بعد میں ایوان سے چلے گئے ۔ بتایاگیاہے کہ مختلف صوبوں سے نکلنے والی گیس پر وفاقی حکومت سرچارج لیتی ہے ، حاصل ہونیوالی رقم پاک ایران گیس پائپ لائن سمیت نئے منصوبوں کے نام پر اکٹھی کی جارہی ہے جس پر صوبوں کواعتراض ہے ۔ ایم کیوایم کے رہنماء رشید گوڈیل کاکہناتھاکہ ایک عرصے سے حکومت ٹیکس لے رہی ہے لیکن آج تک کوئی منصوبہ شروع نہیں ہوسکا، تیل کی قیمتیں کم ہوئیں مگر حکومت نے ٹیکس بڑھادیا، حکومت ہر وہ کام کررہی ہے جو غریبوں کے خلاف ہے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...