وائی فائی کے چھوٹے بچوں کے دماغ پر اثرات،تحقیق میں تہلکہ خیز انکشاف

وائی فائی کے چھوٹے بچوں کے دماغ پر اثرات،تحقیق میں تہلکہ خیز انکشاف
وائی فائی کے چھوٹے بچوں کے دماغ پر اثرات،تحقیق میں تہلکہ خیز انکشاف

  


لندن(نیوزڈیسک)وائی فائی سے ہم بہت فائدہ اٹھاتے ہیں اور اب اسے اپنی زندگی کا لازمی حصہ سمجھنے لگے ہیں لیکن ایک تازہ تحقیق میں انکشاف ہوا ہے کہ وائی فائی کے سگنلز بچوں کے لئے انتہائی نقصان دہ ہیں۔ تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ نومولود کے لئے یہ سگنلز زہر قاتل ثابت ہوتے ہیں۔Journal of Microscopy and Ultrastructureمیں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق والدین کا چاہیے کہ وہ اپنے بچوں کو ایسے سگنلز سے بچائیں ،ایسے سگنلز بچوں کے لئے بالعموم اور ماں کے پیٹ میں موجود بچوں کے لئے بالخصوص خطرناک ثابت ہو سکتے ہیں۔تحقیق کاروں نے تمام حاملہ ما?ں کو خبردار کیا ہے کہ وہ اپنے ساتھ موبائل فونز کو بھی نہ لے کر چلیں کیونکہ ان میں سے نکلنے والی شعاعیں پیٹ میں موجود بچے کے لئے مضر ہیں۔تحقیق کاروں کے مطابق بڑوں کی نسبت بچوں کے دماغ وائی فائی اور موبائل کی شعاعوں کو زیادہ جذب کرتے ہیں۔بچوں کے امراض کی ماہر ڈاکٹر مایا کلین کا کہنا ہے کہ حاملہ ماؤں کو یہ بات معلوم ہونی بہت ضروری ہے کہ یہ شعاعیں پیٹ میں موجود ان بچوں پر اثر انداز ہو سکتی ہیں جن کا ابھی دماغ بننے کے مراحل میں ہے۔اس کا کہنا ہے کہ حالیہ برسوں میں بچوں میں دماغی امراض میں اضافہ ہوا ہے اور یہ ایک تشویشناک بات ہے۔تحقیق میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ان شعاعوں سے محفوظ رہنے کے لئے ہمیں چاہیے کہ ہم ان اشیاء کو فاصلے پر رکھ کر استعمال کریں۔ مثال کے طور پر لیپ ٹاپ اور انسان کا آپسی فاصلہ کم از کم 19سینٹی میٹر ہونا چاہیے۔قارئین کی دلچسپی کے لئے یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ اگر آپ وائی فائی سگنلز کے درمیان ایک سال تک موجود رہیں تو آپ کا جسم شعاعوں سے اتنا متاثر ہوگا جتنا اگر آپ 20منٹ کی موبائل کال کریں۔

مزید : صفحہ آخر


loading...