انقلاب کوکین پینے سے نہیں آتے

انقلاب کوکین پینے سے نہیں آتے

  

اسلام آباد(اے این این)مسلم لیگ (ن ) کے سینئر رہنما مشاہد اللہ خان نے عمران خان پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک لیڈر ہے جو کوکین پی کر رات کو کالا چشمہ پہن کر اجلاس کرتا ہے، سارا دن ایک ہی بات کرتا رہتا ہے، انقلاب کوکین پینے سے نہیں آتے۔ ایک نجی ٹی وی کے مطابق مشاہد اللہ نے کہا کہ سگریٹ میں ہیروئن ، افیون اور چرس ڈالی جاتی ہے ، جہاں دل کے اسٹنٹ جعلی ہوں وہاں غیر معیاری سگریٹ کی بات کیاکرنا، پتا کیا تو معلوم ہوا کوکین پینے والے سورج یا بلب کی روشنی برداشت نہیں کر سکتے۔انہوں نے کہاکہ ایک لیڈر ہے جو رات کو کالا چشمہ پہن کر اجلاس کرتا ہے،ایک سیاسی لیڈر کوکین پیتا ہے اور وہ سارا دن ایک ہی بات کرتا رہتا ہے، سیاستدانوں کے سگریٹ پینے سے ملکی سیاست پر اثرات مرتب ہوتے ہیں، سیاسی لیڈروں کے سگریٹ پینے پر تو مکمل پابندی ہونی چاہیے،سگریٹ اور سب نشوں پر پابندی ہونی چاہیے، آپ احتجاج کیوں کر رہے ہیں ، یہ تو چور کی داڑھی میں تنکا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -