شدیدسردی کے باعث گیس کی قلت

شدیدسردی کے باعث گیس کی قلت

  

لاہور(خبر نگار) ملک بھر میں جاری سردی کی شدید لہر اور دھند کے باعث گیس کی قلت سنگین شکل اختیار کر گئی ہے۔جس کے باعث گھروں کے چولہے ٹھنڈے ہو کر رہ گئے ہیں اور اس میں بالخصوص لاہور کے بی بی پاک دامن، سمن آباد، ساندہ، مزنگ، رشید پورہ، غازی آباد اور باغبانپورہ سمیت گرین ٹاؤن اور ٹاؤن شپ جیسی گنجان آبادیوں میں کھانے تیار کرنے کے اوقات میں گیس کا پریشر لو رہنے لگا ہے۔جس پر شہری ایل پی جی اور لکڑیوں کا مجبوراً استعمال کرنے لگے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت سمیت ملک بھر میں جوں جوں سردی کی شدت اور دھند میں اضافہ ہو رہا ہے، اسی تناسب سے گیس کی ڈیمانڈ بڑھنے پر گیس کی قلت سنگین صورتحال میں تبدیل ہو کر رہ گئی ہے اور گیس حکام کی جانب سے سی این جی سیکٹر اور فرٹیلائز سمیت دو پاور سیکٹرز کو گیس کی سپلائی معطل کرنے کے باوجود گیس کا شارٹ فال کنٹرول باہر ہو کر رہ گیا ہے کہ اور اس میں لاہور کے دس لاکھ سے زائد صارفین سمیت پنجاب بھر میں کھانا تیار کرنے کے اوقات میں صارفین کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑھ رہا ہے اور بالخصوص بچوں کو سکول اور دفتر جانے والے شہری شدید پریشانی سے دوچار ہونے لگے ہیں، جس پر صارفین ایل پی جی کے سلنڈروں اور لکڑیوں پرمجبوراً کھانے تیار کرنے لگے ہیں، جس پر صارفین سراپا احتجاج بن کر رہ گئے ہیں اور صارفین کا کہنا ہے کہ سردی کی شدت اور دھند کی لہر بڑھنے کے ساتھ ہی گھروں کے چولہے ٹھنڈ سے بڑھ گئے ہیں اورگیس کی شدید قلت ایک سنگین صورتحال میں تبدیل ہو گئی ہے اس پر گیس حکام کو نوٹس لینا چاہئے۔

مزید :

صفحہ اول -