شہباز شریف کا سولر منصوبے سے حاصل 90کروڑ روپے ہیلتھ کیئر سسٹم کی بہتری کیلئے دینے کا اعلان

شہباز شریف کا سولر منصوبے سے حاصل 90کروڑ روپے ہیلتھ کیئر سسٹم کی بہتری کیلئے ...

  

 لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہباز شریف کی زیر صدارت اعلی سطح کااجلاس منعقد ہوا،جس میں پنجاب حکومت کی جانب سے قائد اعظم سولر پارک بہاولپور میں لگائے گئے 100میگاواٹ کے سولر منصوبے کی کارکردگی کا جائزہ لیاگیا۔وزیراعلیٰ کو بریفنگ میں بتایا کہ 100میگاواٹ کے سولرمنصوبے سے ایک برس میں منافع کی مد میں حاصل ہونیوالے90کروڑ روپے پنجاب حکومت کے خزانے میں جمع کرا دےئے گئے ہیں۔وزیراعلیٰ شہباز شریف کو اس موقع پر چےئرمین قائداعظم سولرپاور کمپنی عارف سعید نے 100 میگاواٹ کے سولرمنصوبے سے ایک برس میں منافع کی مد میں حاصل ہونیوالے 90کروڑ روپے کا چیک دیا۔وزیراعلیٰ نے سولر منصوبے سے حاصل ہونیوالے 90کروڑ روپے ہیلتھ کےئر سسٹم کی بہتری کیلئے دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ یہ رقم صوبے کے عوام کو صحت کی معیاری سہولتوں کی فراہمی پر خرچ کی جائے گی اورپنجاب حکومت کے100میگاواٹ کے سولر منصوبے سے حاصل ہونے والے منافع کی پائی پائی شفاف طریقے سے صحت عامہ کی سہولتوں کی بہتری پر صرف ہوگی۔انہوں نے کہا کہ قائد اعظم سولر پاور کمپنی نے ایک برس میں سولر منصوبے سے منافع کی مدمیں 90کروڑ روپے پنجاب حکومت کے خزانے میں جمع کرائے ہیں اوریہ پنجاب حکومت کے 100میگاواٹ کے سولر منصوبے کی شاندار کارکردگی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب جس شفافیت کے تحت منصوبے چلارہی ہے یہ اسی کا صلہ ہے کہ 90کروڑ روپے محکمہ خزانہ حکومت پنجاب میں جمع کرائے گئے ہیں ۔ اجلاس میں چےئرمین قائد اعظم سولر پاور پرائیویٹ لیمٹیڈ عارف سعید، چےئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹری خزانہ ،سیکرٹری توانائی،سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ اینڈ میڈیکل ایجوکیشن، چیف ایگزیکٹو آفیسر قائداعظم سولر پارک اورمتعلقہ حکام نے شرکت کی۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس منعقد ہوا،تین گھنٹے تک جاری رہنے والے اجلاس کے دوران صوبے میں امن و امان کی مجموعی صورتحال اور سیف سٹی پراجیکٹ پر پیش رفت کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امن عامہ کی فضا کو بہتر سے بہتر بناناہماری اولین ترجیح ہے اور اس مقصد کیلئیپنجاب حکومت نے عوام کے جان و مال کے تحفظ اور قانون کی عملداری یقینی بنانے کیلئے موثر اقدامات اٹھائے ہیں اور صوبے میں قیام امن اور جرائم کی روک تھام کے ساتھ دہشت گردی کے خاتمے کیلئے کئے جانے والے اقدامات کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں۔ انہوں نے ہدایت کی کہ جرائم پیشہ افراد کے خلاف تسلسل کے ساتھ بلاامتیاز کارروائی جاری رکھی جائے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب واحد صوبہ ہے جہاں عوام کے جان و مال کے تحفظ کیلئے سیف سٹی پراجیکٹ شروع کیا گیا ہے۔ انہو ں نے ہدایت کی کہ منصوبے کو اعلیٰ معیار کے ساتھ مقررہ مدت میں مکمل کرنے کیلئے ہر ضروری اقدام اٹھایا جائے اور اس منصوبے کو مربوط انداز میں تیزی سے آگے بڑھایا جائے اور متعلقہ محکمے بہترین کوآرڈینیشن کے تحت منصوبے پر کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کے دیگر6 بڑے شہروں میں سیف سٹی پراجیکٹ شروع کرنے کیلئے ضروری امور جلد طے کئے جائیں اور سیف سٹی پراجیکٹ کے تحت جن مقامات پر کام ہو رہا ہے وہاں سے ملبہ فوری طور پر اٹھایا جائے۔ صوبائی وزراء رانا ثناء اللہ، کرنل (ر) محمد ایوب، جہانگیر خانزادہ، مشیر رانا مقبول احمد، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پولیس، سیکرٹری داخلہ، متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز اور اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ بہترین ٹریفک مینجمنٹ کا نظام مہذب معاشرے کی پہچان ہوتا ہے۔ موثر ٹریفک مینجمنٹ اور ٹریفک ری انجینئرنگ کے ذریعے ٹریفک کے نظام کو بہتر بنانا ہوگا اور ٹریفک قوانین کو بھی نافذ کرکے ان پر سختی سے عملدرآمد کرانا ہوگا۔ ٹریفک کی خلاف ورزی کے حوالے سے قوانین میں ترامیم اور جرمانو ں میں اضافے کا جائزہ لے کر جلد حتمی سفارشات پیش کی جائیں۔لاہور کی 5 سڑکو ں کو ماڈل روڈز بنانے کیلئے فوری اقدامات کئے جائیں اور ماڈل روڈز پرٹریفک کے بہاؤ کو رواں دواں رکھنے کیلئے فوری اقدامات کئے جائیں۔ ون ویلنگ کی روک تھام کیلئے زیرو ٹالرنس کی پالیسی پر عملدرآمد کیا جائے۔وہ لاہور سمیت صوبے کے بڑے شہروں میں ٹریفک نظام کو بہتر بنانے کے حوالے سے مختلف تجاویز، سفارشات اور اقدامات کا جائزہ لینے کے حوالے سے قائم سٹیئرنگ کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عوام کو ٹریفک کی بنا پر مشکلات سے چھٹکارا دلانا ہماری ترجیح ہے اور اس مقصد کیلئے اب ہاتھ پر ہاتھ رکھنے کی بجائے ایسے عملی اقدامات کرنا ہوں گے جس سے عوام کو ریلیف ملے۔ ٹریفک کے نظام میں بہتری میں ٹریفک اہلکاروں کا کردار کلیدی حیثیت رکھتا ہے، اس لئے ٹریفک نظام کی بہتری اور عوام کی سہولت کیلئے ٹریفک کے عملے کو فرض شناسی، ایمانداری اور محنت سے کام کرنا ہوگا۔ غفلت یا کوتاہی کسی صورت برداشت نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ لاہور کی 5 سڑکوں کو ماڈل روڈزبنانے کیلئے فوری طور پر ضروری اقدامات کئے جائیں اور فیروزپور روڈ، جیل روڈ، علامہ اقبال روڈ، گلبرگ مین بلیوارڈ اور پیکو روڈ کو ماڈل روڈز بنایا جائے گا۔ ماڈل روڈز پر بہترین ٹریفک مینجمنٹ کے تحت ٹریفک کے بہاؤ کو رواں دواں رکھنا ہوگا۔۔ صوبائی وزیر جہانگیر خانزادہ، معاون خصوصی ملک احمد خان، اراکین اسمبلی میاں مرغوب احمد، میاں نصیر احمد، وحید گل، مشیر ڈاکٹر عمر سیف، چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پولیس، متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز اور اعلیٰ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہباز شریف سے صوبائی وزیر انسداد دہشت گردی کرنل (ر)محمد ایوب نے ملاقات کی،جس میں صوبے سے دہشت گردی ،انتہاء پسندی اورفرقہ واریت کے خاتمے کیلئے کیے جانے والے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف نے کہا کہ پاکستان میں دہشت گردی،انتہاء پسندی اورفرقہ واریت کی قطعاً کوئی گنجائش نہیں ۔انسداددہشت گردی کے لئے تمام اداروں نے شاندارکام کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی لازوال قربانیوں کی دنیا میں کوئی مثال نہیں ملتی اوراس جنگ میں شہید ہونے والے قومی ہیروزہیں جن کی عظیم قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف نے پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کے تحت لاہورمیں غریب عوام کو سستے گھر تعمیر کرکے دینے کے لئے وسائل اکٹھے کرنے کی غرض سے لاہور شہر میں تجارتی اہمیت کی 3سرکاری املاک کی خالی اراضی پر کمرشل پلازے اور اپارٹمنٹس ٹاور تعمیر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اس جوائنٹ ونچر کی آمدنی سے مضافاتی علاقوں میں سستی رہائشی کالونیاں بنیں گی۔وزیر اعلی محمد شہباز شریف نے اس حوالے سے مختلف مقامی اور غیر ملکی کنسٹرکشن کمپنیوں کے ساتھ معاہدے کے لئے منصوبے کے ماسٹر پلان کی تیاری ،فنانشل ٹرانزیکشن سٹرکچراورفزیبلٹی کی تیاری کے لئے خصوصی کمیٹی قائم کی ہے جس کا اجلاس اے سی ایس کانفرنس روم سول سیکرٹریٹ لاہور میں منعقد ہوا ۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب شمائل احمد خواجہ نے اجلاس کی صدارت کی ۔اجلاس میں اربن سیکٹر پلاننگ اینڈ مینجمنٹ سروسز یونٹ پنجاب کی جانب سے پیش کئے گئے مجوزہ ماسٹر پلان پر تفصیلی غور کے علاوہ حکومت اور نجی اشتراک سے سرمایہ کاری اور متوقع منافع کی ٹرانزیکشن کا طریقہ کار وضع کیا گیاجس سے لو کاسٹ ہاؤسنگ سکیموں میں رقم لگائی جائے گی۔ پلان کے مطابق ایل او ایس چوک فیروز پور روڈ ،فوڈ گودام گرومانگٹ روڈ اور جناح ہسپتال لاہور سے ملحق ’’بلڈنگ اینڈ روڈ ریسرچ سنٹر ‘‘کنال روڈ لاہور کے خالی فرنٹ کی اراضی کمرشل پلازوں کی تعمیر کے لئے تجویز کی گئی ہے۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری پنجاب شمائل احمد خواجہ نے اس موقع پر کہا کہ عوامی بہبود کے اس منصوبے میں فنانشل ، لیگل اور ٹیکنیکل کنسلٹنٹس سے مشاورت کے بعدایک ہفتے کے دوران ماسٹر پلان کو حتمی شکل دی جائے تاکہ ترکی کی البراک کمپنی سمیت مختلف بین الاقوامی کمپنیوں سے اس حوالے سے بات آگے بڑھائی جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ منصو بے کی کامیابی پر اسے صوبے کے دوسرے شہروں تک توسیع بھی دی جائے گی۔ اجلاس میں چیف ایگزیکٹو آفیسراربن سیکٹر پلاننگ اینڈ مینجمنٹ سروسز یونٹ پنجاب ڈاکٹر ناصر جاوید ،ممبر پی اینڈ ڈی برائے فنانس رسک مینجمنٹ یونٹ آغا وقار ،ڈائریکٹر جنرل ایل ڈی اے زاہد اختر زمان اور پراجیکٹ ڈائریکٹر پنجاب لینڈ ڈویلپمنٹ کمپنی معظم اقبال سپراکے علاوہ دیگر سینئر آفسران نے شرکت کی۔

مزید :

صفحہ اول -