میڈیکل کالج کی تقریب میں خاتون پروفیسر کی ہنگامہ آرائی، پرنسپل پر قاتل ہونے کے الزامات

میڈیکل کالج کی تقریب میں خاتون پروفیسر کی ہنگامہ آرائی، پرنسپل پر قاتل ہونے ...
میڈیکل کالج کی تقریب میں خاتون پروفیسر کی ہنگامہ آرائی، پرنسپل پر قاتل ہونے کے الزامات

  

گوجرانوالہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) میڈیکل کالج کی تقریب میں ایک خاتون پروفیسر نے ہنگامہ آرائی کی اور کالج پرنسپل پر قاتل ہونے کے الزامات لگا دئیے۔

وزیراعظم نواز شریف نے عدالت سے آرٹیکل248 کے تحت استثنا مانگ لیا

تفصیلات کے مطابق گوجرانوالہ کے میڈیکل کالج کو 7 سات مکمل ہونے پر تقریب کا اہتمام کیا گیا جس سے وزیراعلیٰ پنجاب کے مشیر خواجہ سلمان رفیق نے خطاب کرنا تھا۔ تقریب کیلئے سجائے گئے سٹیج پر پرنسپل محسن آفتاب اور دوسرے سینئر پروفیسر بیٹھے تھے کہ پروفیسر ڈاکٹر عظمیٰ سٹیج پر چڑھ گئیں اور ہنگامہ آرائی شروع کر دی۔ انہوں نے پرنسپل پر قاتل ہونے کے الزامات لگائے اور کہا کہ یہاں من پسند لوگوں کو نوازا جاتا ہے اور ان پر بھی ظلم ہوا ہے۔

”شادی کے بعد اپنے والد کے زیر کفالت نہیں ہوں “، مریم نواز نے سپریم کورٹ میں جواب جمع کر ادیا

ڈاکٹر عظمیٰ کی جانب سے الزامات کا سلسلہ جاری تھا کہ ان کے ساتھی ڈاکٹرز نے انہیں بولنے سے روک دیا اور سٹیج سے اتار کر دوسرے کمرے میں لے گئے۔

مزید :

گوجرانوالہ -اہم خبریں -