پاکستانی تاریخ میں کسی طاقتور کااحتساب نہیں ہوا، قطری شہزادے کا خط عنقریب جھوٹا ثابت ہو گا ،نعیم بخاری سے مذاق کئے بغیر نہیں رہا جاتا :عمران خان

پاکستانی تاریخ میں کسی طاقتور کااحتساب نہیں ہوا، قطری شہزادے کا خط عنقریب ...
پاکستانی تاریخ میں کسی طاقتور کااحتساب نہیں ہوا، قطری شہزادے کا خط عنقریب جھوٹا ثابت ہو گا ،نعیم بخاری سے مذاق کئے بغیر نہیں رہا جاتا :عمران خان

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)تحریک انصاف  کے چیئر مین عمران خان نے کہا ہے کہ  اگروزیراعظم پارلیمنٹ میں جھوٹ بولے گا  تو پارلیمنٹ کی کیا اہمیت باقی بچے گی؟پاکستان کی تاریخ میں آج تک کسی طاقور کا احتساب نہیں ہوا لیکن سپریم کورٹ کے اقدامات سے نئی  تاریخ بن  رہی ہے، پانامہ کیس پاکستان کیلئے ایک فیصلہ کن مرحلہ ہے ، قطری شہزادے کا خط عنقریب جھوٹا ثابت ہو گا ،نعیم بخاری زبردست کیس لڑ رہے ہیں ، ان سے مذاق کئے بغیر  نہیں رہا  جا سکتا ،  کرپشن کے پیسے کو چھپایا نہیں جا سکتا ،جہاں بھی عوام کا پیسہ غائب ہو  جواب دینا پڑتا ہے ،  کرپشن کیخلاف دھرنا دیتے تو یہ لوگ کہتے کہ عمران خان فوج لا رہا ہے ، یہ مارشل لا لگوا دے گا ۔

گوجرانوالہ میں طالب علم کی اپنے ہی استاد پر فائرنگ ، ٹیچر بال بال بچ گیا

دنیا نیوز کے پروگرام”آن دی فرنٹ“میں گفتگو کرتے ہوئے عمران خا ن نے وزیراعظم پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف نے  پارلیمنٹ میں جو کہا اور ان کے بچوں نے جو بیانات دئیے ان میں واضح  تضاد پایا جاتا ہے، بیانات میں پائے جانے والے تضاد سے معلوم ہوتا ہے کہ ان میں سے کوئی تو جھوٹ بول رہا ہے؟۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ میں نواز شریف نے لکھی ہوئی تقریر پڑھ کر جواب دیا، وہ اربوں روپے کے اثاثے چھپانے کیلئے جھوٹ بول رہے ہیں، جب کسی نے کوئی جرم نہ کیا ہوتووہ اسمبلی میں ہو یا کورٹ میں ، کھل کر بات کرتا  ہے ،لیکن ان کے کیلئے چوری کا چھوٹا لفظ ہے ، انہوں نے  چوری نہیں ڈاکہ  ڈالا ہے، حکمران ملک کے غریب عوام کا حق کھا کر ہضم کرنا چاہ رہے ہیں  جو تحریک انصاف کبھی کرنے نہیں دے گی۔عمران خان کاکہنا تھا کہ کرپشن کے پیسے کو چھپایا نہیں جا سکتا،جہاں بھی عوام کا پیسہ غائب ہو جواب دینا  پڑتا ہے ،  لیکن خواجہ آصف نے کہا کہ لوگ بھول جائیں گے مگر ہم نے ایسا ہونے نہیں دیا ، پانامہ کے ایشو کو ہم نے دھرنوں میں ڈنڈے کھا کر زندہ رکھا،ہم کرپشن کیخلاف دھرنا دیتے تو یہ لوگ کہتے کہ عمران خان فوج لا رہا ہے ، یہ مارشل لا لگوا دے گا۔

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ برطانیہ  میں وزرا پر چھوٹے چھوٹے کیس تھے انہوں نے بھی جواب دیا، لیکن یہاں کہا جاتا ہے کہ ہمارے بچوں کے اثاثوں کے بارے میں بات نہ کرو،جب کرپشن سے کمائے گئے اثاثے اپنے بچوں کے نام پر رکھے جائیں گے تونام لینے پر مجبور ہو جائیںگے، اگروزیراعظم پارلیمنٹ میں جھوٹ بولے تو پارلیمنٹ کی کیا اہمیت بچے گی؟انہوں نے قوم کو جواب نہیں دھوکا دیاہے ۔جب تک ایسے گھٹیا لوگ ملک پر بیٹھے اسے کھارہے ہیں تب تک ملک کا کچھ نہیں بنے گا،مگرمیں اللہ کیلئے ان کیخلاف جہاد کررہا ہوں اور قبر تک ان کاپیچھا نہیں چھوڑوںگا۔ عمران خان نے کہا کہ میںنواز شریف کو جو کہتا ہوں خود کہتا ہوںلیکن نوازشریف خود مظلوم بن کر پیچھے ہو جاتے ہیں اور پالے ہوئے لوگ میرے خلاف بے بنیاد باتیں کرنا شروع کردیتے ہیں۔ن لیگی وزرا من گھڑت بیانات دے کر مجھے بلیک کرتے ہیں اور ناپسندیدگی کا اظہار کرتے ہیں لیکن اگرمیں پانامہ سے پیچھے ہٹ جاوں تو انہیں بہت اچھا لگوں گا ، ان لوگوں پر کسی صورت بھروسہ نہیں کیا جاسکتا ،انہوں نے بی بی شہید اور غنوی بھٹو پر بھی کیچڑ اچھالاتھا ، یہ اوپر سے دیکھنے میں کچھ اور جبکہ اندر سے انکی اصلیت میں زمین آسمان کا فرق ہے۔میں دعوی سے کہتا ہوں کہ آج تک جس جس کا  آئی سی آئی جے کی ویب سائٹ پر نام آیا کسی نے انکار نہیں کیا، اور نہ ہی یہ کہاکہ ہماری کوئی آف شور کمپنی نہیں ہے ، موٹو گینگ ایک منظم پراپیگنڈے کے تحت چل رہا ہے، مگر میڈیا اس پر زبردست جنگ کر رہا ہے، لیکن افسوس کہ کچھ لوگ اپنے مفاد کیلئے حکومت کے ساتھ ملے ہوئے ہیں۔

چیئرمین پی ٹی آئی کاکہنا تھا کہ اگر مریم نواز کا نام آئی سی آئی جے کی ویب سائٹ سے ثابت ہوتا ہے تو کیس ختم ہوجاتا ہے کیونکہ قطری شہزادے کے خط میں لکھا ہوا ہے کہ میں جائیداد حسین نواز کو دی تھی،  حکومت کے پاس قطری شہزادے کے خط کے علاوہ کوئی چیز نہیں ہے مگر وہ خط بھی عنقریب جھوٹا ثابت ہونے جارہا ہے ۔نعیم بخاری سے متعلق سوال کا  جواب دیتے ہوئے عمران  خان نے کہا  کہ نعیم بخاری زبردست کیس لڑ رہے ہیں،چند روز قبل انہوں نے پیشی کے بعد جو بیان دیا تھا وہ محض مذاق تھا، سب جانتے ہیں کہ ان سے مذاق کئے بغیر نہیں رہا جاتا، جبکہ ججز بھی زبردست کیس چلا رہے ہیں اور جسٹس ناصرالملک نے کیس کی تحقیقات اچھی کی تھی۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -