24جنوری کو سول سیکرٹیریٹ کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ضرور ہوگا،طارق محمود

24جنوری کو سول سیکرٹیریٹ کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ضرور ہوگا،طارق محمود

لاہور( لیڈ ی رپورٹر )یو نائٹڈ ٹیچرز کونسل پنجاب کے مرکزی رہنماؤں طارق محمود، اللہ بخش قیصر، حافظ عبد الناصر، حافظ غلام محی الدین، محمد اجمل شاد، محمد اشفاق نسیم، کاشف شہزاد چوہدری،وحید مراد یوسفی، محمد صدیق گل، بلال کموکا، آصف جاوید اور شہزاد ندیم قیصرنے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے۔ 24جنوری کو سول سیکرٹیریٹ لاہور کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ضرور ہوگا۔ اساتذہ جھوٹی خبریں پھیلانے والوں کے جھانسے میں نہ آئیں۔ ہم نے مجبور ہو کراساتذہ کو سڑکوں پر لانے کا فیصلہ کیا ہے اساتذہ مسائل کا ذکر کریں تو دل خون کے آنسو رہتا ہے اضلاع میں اساتذہ کی پروموشن اور ڈیفرڈ پے پیکج پر گذشتہ ایک سال سے رتی برابر کام نہیں ہوا۔

ہزاروں اساتذہ حالات سے دلبرداشتہ ہو کر پری میچور ریٹائرمنٹ لے چکے ہیں۔ تکنیکی طور پر ایسے اقدامات کیے گئے اور مختلف قدغنیں لگائی گئی کہ آئندہ پروموشن ہی نہ ہو۔سابقہ حکومت کا روڈ میپ اب بھی جاری ہے ۔ چند اضلاع میں ہیڈز کو سرنڈر کیا گیا اور دیگر اضلاع میں دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ ہیڈز پر دباؤ ڈالا جا رہا ہے کہ اساتذہ کے خلاف کاروائی کا لکھیں۔ پیک امتحانات کے گذشتہ سال کے معاوضہ جات میں 25%کٹوتی کر دی گئی ۔ ٹرانسفر میں غلط شرائط لگا کر کیسز مسترد کر دیے گئے۔ ضلعی دفاتر سے لے کر سیکریٹریٹ تک کوئی کام بغیر رشوت کے نہیں ہوتا۔ کمپیوٹر لیب انچارج اور قاری ٹیچرز آج تک محروم چلے آرہے ہیں۔ میونسپل ٹیچرز کے ساتھ سوتیلے پن کا سلوک کیا جا رہا ہے۔ سکولوں میں تمام ڈاک اور دیگر معملات کی ذمہ داری کمپیوٹر ٹیچرز پر ہے لیکن کمپیوٹر ٹیچرز کا کمپیوٹر الاؤنس دس سالوں سے بندہے ۔ لگتا ہے افسر شاہی اساتذہ کو ان کے جائز حقوق سے محروم رکھ کر نوزائیدہ حکومت کے خلاف سازش کر رہی ہے ۔ وزیراعلی ، وزیر تعلیم سکولز اور سیکرٹری سکولز کے پاس اساتذہ کے لئے وقت نہیں ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4