کہروڑ پکا :ریسکیو 1122کی عمارت میں دراڑیں 2کروڑ 72لاکھ ضائع ہونیکا خدشہ

کہروڑ پکا :ریسکیو 1122کی عمارت میں دراڑیں 2کروڑ 72لاکھ ضائع ہونیکا خدشہ

کہروڑ پکا ( سٹی رپورٹر) کہروڑ پکا محکمہ صوبائی پروینشنل اور ٹھیکیدار کی بندربانٹ ریسکیو 1122 کروڑپکا کی تعمیر میں وسیع پیمانے پر گھپلے مبینہ 2 کروڑ 70لاکھ روپے کی مالیت سے (بقیہ نمبر61صفحہ7پر )

تعمیر ریسکیو 1122 عمارت کی افتتاح سے قبل ہی دیوار میں دراڑیں پڑ گئیں۔ذرائع کے مطابق سابق وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف نے دیگر شہروں کی طرح کہروڑپکا میں بھی ایم این اے عبدالرحمن کانجو کی کاوشوں سے محکمہ صوبائی پروینشل کے بجٹ میں مبینہ 2 کروڑ 70 لاکھ کا بجٹ پاس کیا جس میں صوبائی پروینشنل سے یہ ٹینڈر مہر شاھدنواز ٹھیکیدار نے لے کر تعمیرانی کام کا آغاز کردیا یہ منصوبہ 2کروڑ 70 روپے کا شروع میں ہی سے کرپشن کی نظر ہوتا چلا گیا اور سرکاری عمارت کء تعمیر متعلقہ عملہ اور ٹھیکداد نے ایک اور عجب کرپشن کی غضب کہانی رقم کردی کیونکہ حکومت اپنے رد بدل میں پڑی رہی اور اس ایک سال کے عرصے میں اپنی مرضی سے متعلقہ افسران کو ٹھیکیدار نے ٹھیکہ دیتے ہوئے یہ کام جاری رکھا اورتقریباً ایک سال کے عرصے میں مبینہ 2کڑور 70لاکھ سے تعمیر ہونے والی عمارت مکمل کر دی گئی جبکہ عمارت مکمل ہونے پر افتتاح سے قبل ہی دیوار میں ناقص ریت اور دوئم سیمنٹ استعمال ہونے سے دراڑ پانی کی ٹینکی سائیڈوں سے اکھڑنا اور صحن میں لگے ناقص ٹف ٹائل بیٹھنا شروع ہو گئی ہے مزید اس عمارت کے پیم میں اور پانی کی ٹینکی میں اور اسکی بارڈر کے لئے جو لوہا استعمال کیا گیا ہے وہ انتہائی ناقص کوالٹی کا ہے جس پر محمد سجاد دلادر احمد محمد دلشاد و دیگر شہریوں نے احکام بالا سے مطالبہ کیا ہے عمارت کی تعمیر میں ناقص میڑیل استعمال کرنے پر کے ذمہ داران کے خلاف آڈٹ کرکے ان کے خلاف محکمانہ کاروائی عمل میں لائی جائے‘ مزید انکشافات کی توقع ہے ٹھیکدار شاہد نواز نے موقف دیتے ہوئے کہا کہ میں ابھی مصروف ہوں بعد میں بات کرونگا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر