ایم ایس نشتر کو ڈائریکٹر اینٹی کرپشن پر اعتراض ‘ انکوائریاں تبدیل کرنیکی درخواست

ایم ایس نشتر کو ڈائریکٹر اینٹی کرپشن پر اعتراض ‘ انکوائریاں تبدیل کرنیکی ...

ملتان (وقائع نگار) ایم ایس نشتر ہسپتال نے ڈائریکٹر اینٹی کرپشن ملتان پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے ڈی جی اینٹی کرپشن کو(بقیہ نمبر30صفحہ12پر )

اپنے خلا ف انکوائریاں ملتان سے تبدیل کرنے کی درخواست دیدی ہیدرخواست کے مدعی،ڈاکٹر عاشق کیمطابق ان کو اینٹی کرپشن دفتر میں انکوائری کیدوران ڈائریکٹر اینٹی کرپشن کیایماء پرپرائیویٹ افراد کیذرئعے ہراساں اورملازمین سیتذلیل کروائی جاتی ہے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ۔ ڈائریکٹر اینٹی کرپشن اور ایم ایس نشتر کیدرمیان ذاتی چپقلش 5برسوں سے چلی آرہی ہیجس کی بنیادپر ڈاکٹر عاشق کیخلا ف ڈراپ ہوئی انکوائریاں بھی کھولی جارہی ہیں، ڈی جی اینٹی کرپشن کو ملتان ریجن سے انکوائری تبدیل کرنے کی درخواست میں ایم ایس ڈاکٹر عاشق ملک نے لکھاہے کہ ریجنل ڈائریکٹر اینٹی کرپش امجد شعیب ترین سے گزشتہ 7برسوں سے ذاتی چپقلش چلی آہی ہے،بطور ڈی او سی وہ مظفرگڑھ میں مجھ سے ادویات لوکل پرچیز کے تحت خریدنے کیلئے دباو ڈالتے جبکہ تبادلوں اور تعیناتیوں کیلئے سفارشیں کرتے تھے،ایک سفارش نہ ماننے پر انہوں نے اس وقت میرے خلاف رپورٹیں بنائی تھی جن کیسخت جوابات دئے گئیتھے،جس کے بعد انہوں نیاینٹی کرپشن میں تعیناتی کیبعد مظفر گڑھ اور ملتان میں ناجائز کیس بنوائے ہیں جوبددیانتی پر مشتمل ہیں، دوران انکوائری ملتان اینٹی کرپشن کیدفتر میں اپنے ماتحتوں کیذرئعے بدزبانی کرائی گئی جبکہ پرائیویٹ کو استعمال کرکے انہیں حراساں کیاگیاویڈیوز بنوائی گئیں،انہوں نے بطور ڈائریکٹر اینٹی کرپشن تعیناتی کیبعد سے انتقامی کارروائیوں کاسلسلہ شروع کررکھاہیاور کئی ایسی انکوارئریاں جو کہ ڈراپ ہوچکی تھیں انکو دوبارہ درخواست میں ڈی جی پنجاب سیاپیل کی گئی ہے کہ ان کیخلاف جاری کیسوں کی انکوائریاں غیر متنازع اور سینئر افسران سے کرائی جائیں۔

درخواست

مزید : ملتان صفحہ آخر