صوبے میں کسی قسم کی غیر قانونی مائننگ کو برداشت نہیں کیا جائے گا ،ڈاکٹر امجد علی

صوبے میں کسی قسم کی غیر قانونی مائننگ کو برداشت نہیں کیا جائے گا ،ڈاکٹر امجد ...

پشاور( سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے وزیر معدنیات ڈاکٹر امجد علی خان نے کہاکہ صوبے میں کسی قسم کی غیر قانونی مائننگ کو برداشت نہیں کیا جائے گا ۔ انہوں نے متعلقہ ضلعی ڈپٹی ڈائریکٹرز اورا سسٹنٹ ڈائر یکٹرز کو ہدایت کی کہ غیر قانونی مائننگکو مکمل طور پر بند کیا جائے بصورت دیگر ان کے خلاف سخت تادیبی کاروائی کی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ممبر صوبائی اسمبلی فخر جہان کی قیادت میں آئے ہوئے نمائندہ وفد سے ملاقات کے دوران کیا وزیرمعدنیات نے کہا کہ جب تک غیر قانونی مائننگ کو بند نہیں کیا جاتا ہم ترقی نہیں کر سکتے انہوں نے کہا کہ باہر کمپنیوں کے قانونی سرمایہ کاروں کو ہر قسم سہولیات فراہم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں معدنیات کے کا طریقہ کا ر انتہانی اسان بنادیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ قانونی طریقے سے مائننگ میں حصہ لینے والے تمام مقامی سرمایہ کاروں کا شکریہ ادا کرتے ہیں ۔ ڈاکٹر امجد خان نے کہاکہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت معاشرے سے کرپشن کا خاتمہ چاہتی ہے اور عوامی خواہشات کے مطابق بے لو ث خدمت کے لئے اقدامات اٹھار ہے ہیں ۔مزید براں ہانگ کانگ کے ایک تجارتی وفد نے گزشتہ روزوزیر معدنیات خیبر پختونخوا ڈاکٹر امجد علی خان سے پشاور میں ملاقات کی اور ان سے معدنیات کی تلاش اور دریائے سندھ میں پائے جانے والے پلیسر گولڈ میں سرمایہ کاری کرنے کی خواہش کا اظہار کیا۔ وفد کے ارکان سے باتیں کرتے ہوئے ڈاکٹر امجد نے بتایا کہ خیبر پختونخوا میں قیمتی معدنیات کے ناختم ہونے والے ذخائر پائے جاتے ہیں جس کی تلاش کے لیے منصوبہ بندی کی جارہی ہے۔ اس حوالے سے مالی طور پر مستحکم اور تجربہ کار کمپنیوں کے لیے سرمایہ کاری کے اچھے مواقع موجود ہیں۔ ڈاکٹر امجد نے کہا کہ اللہ کے فضل وکرم سے امن وامان بحال ہوچکا ہے اور موجودہ حکومت سرمایہ کاروں کی بھرپور حوصلہ افزائی کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سرمایہ کاروں کو ہر طرح کی سہولت اور سیکیورٹی فراہم کرنے کی خواہاں ہے۔ انہوں نے سرمایہ کاروں پر زور دیا کہ پوری دنیا کے سرمایہ کار بلا خوف و خطر معدنیات کے شعبہ میں سرمایہ کاری کے لئے تشریف لے آئے۔

مزید : کراچی صفحہ اول