بدقسمتی سے صحت اور تعلیم کے شعبوں پر کم توجہ دی جاتی رہی ، شا ہ محمود

بدقسمتی سے صحت اور تعلیم کے شعبوں پر کم توجہ دی جاتی رہی ، شا ہ محمود

اسلام آباد (این این آئی)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے ہمارے ہاں صحت اور تعلیم کے شعبوں پر کم توجہ دی جاتی رہی،ہمیں سموگ اور پانی کی کمی سمیت بہت سے ماحولیاتی چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کے لئے ہمیں سائینسی سفارتکای کے اس پلیٹ فارم کو موثر اور نتیجہ خیز بنانا ہے۔ بدھ کو وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے وزارتِ خارجہ میں سائنسی سفارتکای اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سائنسی سفارتکای کے اجلاس میں شریک افسران کو خوش آمدید کہا۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے کچھ عرصہ پہلے وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر معاشی سفارتکای کا آغاز کیا تھا اور آج الحمدللہ سائنسی سفارتکای کی طرف گامزن ہیں ۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ بدقسمتی سے ہمارے ہاں صحت اور تعلیم کے شعبوں پر کم توجہ دی جاتی رہی ۔انہوں نے کہاکہ ہمارے پاس بہترین لوگ ہیں نامور سائنسدان اور ماہرین تعلیم ہیں جن کی معاونت ہمارے لیئے اور اس ملک کیلئے انتہائی سود مند ثابت ہو سکتی ہے ۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ ہم نے ایڈوائزری کونسل برائے خارجہ امور میں خصوصی طور پر ماہرین کو شامل کیا ہے تاکہ ان کے تجربات سے استفادہ کر سکیں ۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ ماحولیاتی تبدیلی ایک اور ایسا شعبہ جس میں ہمیں توجہ اور مشترکہ لائحہ عمل طے کرنے کی ضرورت ہے۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ ہمیں سموگ اور پانی کی کمی سمیت بہت سے ماحولیاتی چیلنجز کا سامنا ہے جن سے نمٹنے کے لئے ہمیں سائنسی سفارتکای کے اس پلیٹ فارم کو موثر اور نتیجہ خیز بنانا ہے ۔مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہاکہ ہمیں ایسی مشاورت اور باہمی تعاون کو جاری رکھنا چاہیے تاکہ ہم اپنے مقرر کردہ اھداف کو احسن طریقے سے حاصل کر سکیں ۔

شا ہ محمود

مزید : صفحہ آخر