زمان پارک سمیت شہر کی متعدد یونین کونسلوں کے واٹر فلٹریشن پلانٹس خراب

زمان پارک سمیت شہر کی متعدد یونین کونسلوں کے واٹر فلٹریشن پلانٹس خراب

لاہور(رپورٹ ،دیبا مرزا) صوبائی دارالحکومت کی 274یونین کونسلوں میں سے بیشتر کے واٹر فلٹریشن پلانٹس بند ہو نے کی شکایات سامنے آگئیں ،جہاں کہیں پر واٹر فلٹریشن پلانٹس چالو ہیں ان کی صورت حال بھی اچھی نہیں ، فلٹریشن پلانٹس کے فلٹربھی تبدیل نہ کئے جانے پر گندے پانی کی شکایات بھی سامنے آرہی ہیں ،متعدد مقامات پر نصب واٹر فلٹریشن پلانٹس پر لگائی گئیں پانی والی ٹونٹیاں کام کرنا چھوڑ گئیں یا پھر انہیں چرا لے جانے کی شکایات عام ہیں۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کی رہائش گاہ زمان پارک ،یونین کونسل گلشن پارک اے بلاک ،یونین کونسل 182 ، 106، 235، 126،165،105اوریونین کونسل 78سمیت متعددیونین کونسلوں کے واٹر فلٹریشن پلانٹس کافی عرصہ سے بند ہیں۔مندرجہ بالایو نین کو نسلو ں کے چیئرمینوں نصیر جٹ،راشد کرامت بٹ،آصف میو، مرزا رضوان بیگ،شیخ نعیم اور میاں اسلم نے بتایا کہ واٹرفلٹریشن پلانٹس میں خرابی کے حوالے سے ہماری دادرسی نہیں ہورہی ،ہم متعدد مرتبہ محکمے کو شکایات درج کرواچکے ہیں لیکن ہمیں مسلم لیگ (ن) سے تعلق رکھنے کی وجہ سے نظر انداز کیا جا رہا ہے ۔ انہو ں نے مزید کہا کہ حکومت ہمارے مسائل کے حل کو یقینی بنا ئے ۔اس حوالے سے جب روزنامہ پاکستان نے وائس چیئرمین واسا شیخ امتیاز محمود سے رابطہ کیا توانہوں نے کہا کہ واسا کے زیر انتظام لگائے گئے واٹر فلٹریشن پلانٹ نہ صرف اچھی حالت میں بھی ہیں اور کام بھی کررہے ہیں اور جن فلٹریشن پلانٹ کے بارے میں شکایات ہیں وہ سٹی گورنمنٹ کے زیر انتظام کام کررہے ہوں۔

فلٹریشن پلانٹس خراب

مزید : صفحہ اول