فیصل آباد میں چار افراد کی 8 سالہ بچی کے ساتھ جنسی زیادتی لیکن اس کے بعد اب یہ چاروں افراد کہاں ہیں ؟ جان کر آپ کیلئے آنسو روکنا ناممکن ہو جائے گا

فیصل آباد میں چار افراد کی 8 سالہ بچی کے ساتھ جنسی زیادتی لیکن اس کے بعد اب یہ ...
فیصل آباد میں چار افراد کی 8 سالہ بچی کے ساتھ جنسی زیادتی لیکن اس کے بعد اب یہ چاروں افراد کہاں ہیں ؟ جان کر آپ کیلئے آنسو روکنا ناممکن ہو جائے گا

  


فیصل آباد (ویب ڈیسک) فیصل آباد مدیں ایک ننھی بچی سے اجتماعی زیادتی کرنے کا واقعہ سامنے آگیا۔ تھانہ محمد آباد کے علاقہ میں 4 درندہ صفت افراد نے کمسن پہلی جماعت کی طالبہ کی عزت تار تار کردی، واقعہ تین یوم قبل پیش آیا۔ درندہ صفت شخص بچی سے زیادتی کرتے رہے، دو افراد نے بچی کے منہ پر کپڑا رکھ کر شور مچانے کی کوشش ناکام بنائی اور پہرہ دیتے رہے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق سدھو پورہ کے رہائشی طارق حسین نے مقدمہ درج کرواتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ میری پہلی کلاس کی طالبہ 8 سالہ بیٹی (ش) 13 جنوری کو گلی میں کھیل رہی تھی کہ اوباش آفتاب عرف کاکو اور ذیشان عرف ثانی اپنے دو نامعلوم ساتھیوں کے ہمراہ اسے بہانے سے بیٹھک میں لے گئے۔ جہاں دونوں نے میری بیٹی سے زیادتی کر ڈالی۔ دوسرے دو افراد نے اس کے منہ میں کپڑا رکھے رکھا۔

ظلم و زیادتی کا شکار ہونے والی بچی کے غریب محنت کش والد طارق اور والدہ نے بتایا کہ ملزمان بااثر ہیں، ہم ڈر اور خوف کے مارے اپنی بیٹی کو سکول نہیں بھیج رہے اور ہمارے اوپر صلح کیلئے دباﺅ ڈالا جارہا ہے۔ ہماری بیٹی پہلی جماعت کی طالبہ ہے جو کہ خوف زدہ ہوگئی ہے اور ہم نے اپنی بیٹی کا علاج معالوجہ بھی کروایا ہے۔ ہم غریب لوگ ہیں۔ ہمیں انصاف دلایا جائے۔

اس امر پرظلم و زیادتی کا نشانہ بننے والی بچی کے والدین اور اہل علاقہ نے شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیراعظم، چیف جسٹس، وزیراعلیٰ پنجاب، آئی جی پنجاب، آر پی او اور سی پی او فیصل آباد سے مطالبہ کیا ہے کہ درندہ صفت ملزمان کو فوری گرفتار کرکے کیفر کردار تک پہنچا کر انصاف و تحفظ فراہم کیا جائے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /فیصل آباد