وزیر خارجہ کی امریکی ہم منصب سے ملاقات، سعودی اور ایرانی قیادت سے ملاقاتوں بارے آگاہ کیا

وزیر خارجہ کی امریکی ہم منصب سے ملاقات، سعودی اور ایرانی قیادت سے ملاقاتوں ...
وزیر خارجہ کی امریکی ہم منصب سے ملاقات، سعودی اور ایرانی قیادت سے ملاقاتوں بارے آگاہ کیا

  



واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے امریکی ہم منصب مائیک پومپیو سے ملاقات کی جس میں دو طرفہ تعلقات اور علاقائی و باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی امریکی وزارت خارجہ میں اپنے ہم منصب مائیک پومپیو سے ملاقات ہوئی۔ اس موقع پر انہوں نے امریکی ہم منصب کو اپنے سعودی عرب اور ایران کے دوروں اور وہاں کی قیادت سے ملاقاتوں کی تفصیلات سے آگاہ کیا۔ خیال رہے کہ وزیر خارجہ نے ایران اور سعودی عرب کے بعد عمان کا دورہ کیا تھا جس کے بعد وہ امریکہ پہنچے ہیں۔

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ پرامن جنوبی ایشیا کا خواب اس وقت تک شرمندہ تعبیر نہیں ہوسکتا جب تک مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں اور 80 لاکھ کشمیریوں کی امنگوں کے مطابق حل نہیں کیا جاتا۔ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں جاری ہیں اور انہیں چھپانے کیلئے ذرائع ابلاغ پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ تاریخی اعتبار سے جنوبی ایشیائی خطے میں قیام امن کیلئے پاکستان اور امریکا کی مشترکہ کاوشیں ہمیشہ سود مند ثابت ہوئی ہیں اور دونوں ممالک کیلئے یکساں مفید رہی ہیں۔

شاہ محمود قریشی نے افغان امن عمل کے حوالے سے کہا کہ پاک امریکہ مشترکہ کوششوں سے 40 سال طویل محاذ آرائی ختم ہونے جارہی ہے، پاکستان خلوص نیت کے ساتھ افغان امن عمل میں اپنی ذمہ داری نبھا رہا ہے۔

وزیر خارجہ نے امریکی ہم منصب سے کہا کہ صدر ٹرمپ اور وزیر اعظم عمران خان کے وژن کے مطابق پاک امریکا تعلقات کو عملی جامہ پہنانے کے لیے دو طرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔

اس موقع پر امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے افغانستان کے سیاسی تصفیے، افغان امن عمل اور پرامن ہمسائیگی کیلئے پاکستان کی مخلصانہ، مصالحانہ کاوشوں کو سراہا۔

مزید : اہم خبریں /قومی