معاف کردینا افضل لیکن اگر دشمن کو زیر کرنامقصود ہوتو یہ عمل کریں

معاف کردینا افضل لیکن اگر دشمن کو زیر کرنامقصود ہوتو یہ عمل کریں
معاف کردینا افضل لیکن اگر دشمن کو زیر کرنامقصود ہوتو یہ عمل کریں

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) کسی کوبھی معاف کردینا افضل ہے لیکن اگر دشمن ناجائز تنگ کرنے سے باز نہ آئے اور اسے زیرکرنا مقصود ہوتو یہ عمل کیا جاسکتا ہے ۔

روزنامہ امت کے مطابق باوضوحالت میں قبلہ رو ہوکر بیٹھ جائیں، اول و آخر سات بار درود شریف پڑھیں اور اس کے درمیان اکتالیس بار سورة فاتحہ اور سورة کوثر پڑھیں۔ ہربار پڑھ کر اپنی ہتھیلی زمین پر مارتے ہوئے مخالفین کا والدہ سمیت نام لیں اور تین با رآمین کہیں، اس کے بعد پھر شروع سے سورة کوثر پڑھیں اور یہی عمل دہرائیں۔ اس کے بعد آخر میں پھر اول آخر تین تین بار درود شریف پڑھ کر رب تعالیٰ سے اپنے مقصد کے لیے دعا مانگیں، خدا نے چاہا تو اس کا مقصد پورا فرمائے گا۔ لیکن ایک مرتبہ پھر یہی کہیں گے کہ کسی استاذ کے بغیر ایسے عمل سے اجتناب کریں اور معاملہ اللہ تعالیٰ کے سپرد کردینے میں بہتری ہوسکتی ہے ۔ 

مزید :

روشن کرنیں -