مقبوضہ وادی میں اسرائیلی جارحیت کیخلاف احتجاج کا سلسلہ جاری

مقبوضہ وادی میں اسرائیلی جارحیت کیخلاف احتجاج کا سلسلہ جاری

  

                                               سرینگر (کے پی آئی)اسرائیلی جارحیت کے خلاف مقبوضہ کشمیرمیں مسلسل احتجاجی ریلیاں نکا نے کاسلسلہ جاری ہے جس دوران فلسطینیوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔گذشتہ روز جہاںہزاروں طلبہ و طالبات، حریت(گ)، پی ڈی پی ،تاجروں،ٹھیکہ داروں، ذرائع ابلاغ سے وابستہ افراد اورمختلف مکتبہ ہائے فکر سے وابستہ افراد نے جلوس نکال کر اسرائیل کے ہاتھوں معصوم لوگوں کی ہلاکتوں پر برہمی کا اظہار کیا وہیں شہر میں موٹر سائیکل پر سوار نوجوانوں نے کئی مقامات پر احتجاج اور نعرہ بازی کی۔ احتجاجی نوجوانوں نے اسرائیلی پرچم نذر آتش کئے جبکہ کئی ایک مقامات پر معمولی نوعیت کے پتھراو کے واقعات بھی پیش آئے۔پرےس کا لونی مےں ذرائع ابلاغ سے وابستہ افراد نے اسرائیل کی جانب سے فلسطینیوں کے قتل عام کے خلاف خاموش احتجا ج کےا۔ قومی، بین الاقوامی، اخبارات اورر خبررساں اداروں میں کام کرنے والے صحافیوں نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈس لئے پریس کالونی سے آبی گذر مارکیٹ تک خاموش احتجاجی ما رچ کیا۔اس سے قبل پی ڈی پی کے سےنکڑوں ورکروںنے پارٹی لےڈران محمد خورشےد عالم ، منتظر محی الدےن اور وحید الرحمن پرہ کی قےادت مےںپارٹی صدر دفتر سے رےگل چوک تک جلوس نکالا۔ پلے کارڈس اور بینر لئے احتجاجی کارکن اسرائیل مخالف نعرے لگاتے ہوئے جب پی ڈی پی ورکروں نے گھنٹہ گھر تک جا نے کی کوشش کی تو رےگل چوک میں پولےس نے انہیںروک لیا ۔ جس دوران طرفےن کے مابےن دھکم پےل ہو ئی بعد مےں پی ڈی پی ورکر دھرنے پر بےٹھ گئے اور اسرئےل کے خلاف جم کر نعرہ بازی کی ۔حریت (گ )کی طرف سے بڈشاہ چوک میں احتجاجی ریلی نکالی گئی جس میں الطاف احمد شاہ، عبدل احد پرہ، فردوس احمد شاہ، ایڈوکیٹ محمد شفیع ریشی، راجہ معراج الدین، محمد یوسف مجاہد، محمد رفیق گنائی، سید محمد شفیع، امتیاز احمد شاہ، امتیاز حیدر اور محمد عمران نے شرکت کی۔احتجاجی مظاہرین نے اسرائیل کے خلاف زبردست نعرے بازی کرتے ہو ئے مطالبہ کےا کہ اسرائیل کو فلسطینیوں کے پر ظلم و تشدد بند کرنا چاہئے۔اس سے قبل اےم پی ہائر اسکنڈ ری سکول کے طلاب پرےس انکلےو مےں فلسطینی جھنڈوں کے ساتھ ساتھ اسرائیل مخالف پلے کارڈس لئے نمودار ہوئے اور اسرائیل کے خلاف زبردست نعرے بازی کی ۔ابھی یہ مظاہرہ جاری ہی تھا کہ امرسنگھ کالج سے ایک بڑا جلوس جس میں سینکڑوں طلبا و ظالبات شامل تھے ، اسرائےل کے خلاف نعرہ بازی کر تے ہو ئے آئے ۔طلاب نے اپنے ہاتھوں میں اسرائیل مخالف پلے کارڈس اٹھا رکھے تھے ان پرفلسطین میں نسل کسی بند کرو،فلسطین میں خون کی ہولی اور دنیا سو گئی،قتل و غارتگری قبول نہیں،مسلم دشمن ہوش میں آئے جےسے نعرے درج تھے۔بعد میں جب یہ طلاب لال چوک پہنچ گئے تو وہاں بمنہ ڈگری کالج سے آیا ہوا ایک اور جلوس ان کے ساتھ مل گیا جس کے بعد ہزاروں طلاب گھنٹہ گھرکے سامنے نعرہ لگاتے رہے ۔احتجاجی طلاب نے بعد میںےواےن او آ فس کی طرف پیش قدمی کی تاہم پولےس نے انہےں وہاں جا نے کی اجازت نہےں دی۔سکولی وردیوں میں ملبوس ان طلاب نے احتجاج کرتے ہوئے اسرائیلی جارحےت کی شدید الفاظ میں مذمت کی ۔طلبہ کے ہاتھوں میں بےنر اور پلے کارڈ تھے جن پرغزہ بچاو انسانےت بچاو ، صیہونی دہشت گردی کو بند کرو، معصوم بچوں کا قتل عام روک دواور غزہ کا محاصرہ ختم کر دو جےسے نعرے درج کئے گئے تھے ۔

شہر خاص کے مختلف کالجوں میں زیر تعلیم طالبات نے بھی لالچوک میں زبردست احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے اسرائیل اور امریکہ کے خلاف نعرے بازی کی ۔یہ طالبات اچانک ریذیڈنسی روڑ پر نمودار ہوئیں اور بعد میں گھنٹہ گھر تک مارچ کیا اور وہاں پر نعرے بازی کرتے ہوئے دھرنا بھی دیا ۔ مسلم ایجوکیشنل انسٹی چیوٹ حیدر پورہ میں زیر تعلیم طلبہ نے بھی ایک احتجاجی جلوس نکلا اور اسرائیلی پرچم نذر آتش کیا ۔ ہا ئرسکینڈری اسکول بٹہ مالو میں زیر تعلیم طلبہ نے بھی ایک احتجاجی جلوس نکالا جو پریس کالونی میں پرامن طور منتشر ہوا۔ حبہ کدل علاقے میں نماز فجر کے بعد نوجوانوں نے اسرائیلی بربریت کے خلاف صدائے احتجاج بلند کیا ۔ اس موقعہ پر نوجوانوں نے مشتعل ہوکر پولیس و فورسز پر پتھراو کیا جس دوران پولیس نے لاٹھی چارج کیا ۔موٹر سائیکلوں پر سوارطلباکا ایک گروپ نعرہ بازی کرتے ہوئے حریت (گ) چیرمین سید علی شاہ گیلانی کی رہائش گاہ واقع حیدر پورہ پر پہنچ گیا اور گیلانی کو گھر سے باہر نکالنے کی کوشش کی تاہم پولیس نے ان کی کوشش کو ناکام بنایا اور طلباکو تتر بتر کرنے کیلئے لاٹھی چارج کیا۔ شاپ کیپرس لالچوک نے بھی اسرائیلی جارحیت کے خلاف ایک احتجاجی جلوس نکالا اور بڈشاہ چوک میں دھرنا دیا۔ ریگل لین دکاندار ایسوسی ایشن نے پرتاب پارک تک احتجاجی جلوس نکالا اور اسرائیل کے خلاف نعرہ بازی کی۔ فلسطینی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے بطور درن بھر جاری رہنے والے احتجاجی مظاہروں کے دوران کشمیر اکنامک الائنس اور جموں کشمیر سینٹرل کنٹریکٹرس کارڈی نیشن کمیٹی نے بھی مشترکہ طور پر ایک احتجاجی جلوس نکالا جو لالچوک کے مختلف بازاروں سے گزرا ۔ احتجاجی جلوس کی قیادت جے کے سی سی سی کے صدر فاروق احمد ڈار کررہے تھے ۔احتجاجی تاجروں نے پریس کالونی میں اسرائیل پرچم کو نذر آتش کیا۔سول لائز میں دن بھر احتجا جی مظاہروں کی وجہ سے رےگل چوک ،جہانگےر چوک ،لال چوک اوربڈشاہ چوک مےں ٹرےفک کی نقل وحرکت دھےمی رہی اور دکانوں کی تھروں اور سڑکوں کے دونوںا طراف دکانداروں کے ساتھ عام لوگوں کی اےک بڑ ی تعدادبھی اسرائیل مخالف نعرے لگاتے دیکھے گئے۔ کشمیر یونیورسٹی میں بھی طلبہ نے اسرائیل مخالف جلوس بر آمد کیا جس میں طلبہ نے امریکہ ،بھارت اور اسرائیل کے خلاف سخت نعرے بازی کی ۔مظاہرین نے فلسطینی عوام کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے یونیورسٹی کے گراونڈ میں مارچ کیا ۔جے وی سی میڈیکل کالج میں تعینات ڈاکٹروں اور نیم طبی عملے نے اسرائیلی جارحیت کے خلاف احتجاجی دھرنا دیا۔ مظاہرین نے اپنے ہاتھوں میں بینر اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر اسرائیل مخالف اور فلسطینی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے حوالے سے نعرے درج تھے ۔

مزید :

عالمی منظر -