غذائی قلت ، جنوبی سوڈان میں 50ہزار بچے موت کے منہ میں جا سکتے ہیں ،یونیسیف

غذائی قلت ، جنوبی سوڈان میں 50ہزار بچے موت کے منہ میں جا سکتے ہیں ،یونیسیف

  

                                              ابوجا (اے پی پی) اقوام متحدہ کے ادارے یونیسیف نے کہا ہے کہ فوری امداد فراہم نہ کی گئی تو سوڈا سے علیحدگی اختیار کرنے والے نئے ملک جنوبی سوڈان میں 50 ہزار بچے موت کے منہ میں جاسکتے ہیں۔ یونیسیف کی طرف سے جاری رپورٹ کے مطابق جنوبی سوڈان میں جاری جنگ کے نتیجہ میں کاشتکار فصلیں کاشت نہیں کرسکے، راستے بند ہوچکے ہیں اور بے گھر ہونے والوں کی تعداد10 لاکھ تک پہنچ چکی ہے۔ یونیسیف نے اس صورتحال میں عالمی برادری سے ایک ارب80 کروڑ ڈالر کی ہنگامی امداد فراہم کرنے کی اپیل کی ہے جس میں سے اب تک 60کروڑ ڈالر دینے کے وعدے کئے گئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق بے گھر ہونے والے افراد غذائی قلت کے باعث گھاس اور پتے کھانے پرمجبور ہیں۔

ایک اور ادارے سیو دی چلڈرن کی رپورٹ کے مطابق جنوبی سوڈان میں شدید غذائی قلت کا شکار افراد کی تعداد40 لاکھ تک پہنچ چکی ہے جن میں سے 25 لاکھ بچے ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -