بڑی گاڑیوں سمیت موٹر سائیکل اور سکوٹر میں ایل پی جی کے استعمال پر پابندی

بڑی گاڑیوں سمیت موٹر سائیکل اور سکوٹر میں ایل پی جی کے استعمال پر پابندی ...

  

   لاہور (کامرس رپورٹر) اوگرا نے نے بڑی گاڑیوں سمیت موٹر سائیکل اور سکوٹر میں ایل پی جی کے استعمال پر پابندی عائد کر دی ۔ اوگرا نے گزشتہ روز بعد دوپہر ایل پی جی کے بڑی گاڑیوں میں فلنگ کے طریقہ کا ر کو انتہائی خطرناک قرار دیتے ہوئے پبلک سروس وہیکلز جن میں بسیں، کوچز اور ویگنیں شامل ہیں کہ علاوہ موٹر سائیکلوں اور سکوٹرز میں استعمال کئے جانے پر پابندی کا نوٹیفیکیشن جاری کیا ہے ۔ پابندی کے لئے ایل پی جی کے پروڈکشن اینڈ ڈسٹری بیوشن رولز میں ترمیم کی گئی ہے ۔ نوٹیفیکیشن کے مطابق ایل پی جی ایک خطرناک گیس ہے اور خطرناک ہونے کے باعث اس کے استعمال کے لئے خصوصی سیفٹی انتظامات کی ضرورت ہے ۔ پاکستان میں بڑی آٹو وہیکلز میں اس کو استعمال کرتے ہوئے سیفٹی انتظامات نہیں کئے گئے ہیں بڑی گاڑیوں میں مسافر سیٹوں کے نیچے سلنڈر اور ٹینک نصب ہیں جو انتہائی خطرناک ہیں اس لئے پابندی عائد کی جاتی ہے ۔ نوٹیفیکیشن میں تمام ایل پی جی لائسنس ہولڈرز اور ڈیلرز کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ نئے رولز پر ہر صورت میں عمل درآمد کریں اور بڑی گاڑیوں میں گیس کی فلنگ نہ کریں خلاف ورزی کی صورت میں کارروائی کی جائے گی ۔ دوسری جانب ایل پی جی ڈسٹری بیوشن ایسوسی ایشن کے چیرمین عرفان کھوکھر نے اس فیصلہ کو سی این جی مافیا کے زیر اثر اوگرا کی بے غیرتی قرار دیتے ہوئے مکمل مسترد کرنے کا اعلان کیا ہے ۔ انہوں نے روز نامہ ”پاکستان“سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اوگرا کا یہ فیصلہ سمجھ سے بالا تر ہے ایک جانب اوگرا کی جانب سے ایل پی جی کے بطور فیول استعمال کی حوصلہ افزائی کی جا رہی ہے اوگرا کی منظوری کے بعد ہی اس وقت ملک میں پانچ ایل پی جی سٹیشن قائم ہو کر کام کر رہے ہیں ۔ مزید بیس کو لائسنس جاری کر دیئے گئے ہیں جن کی تیاری کا کام جاری ہے سو لائسنس کی منظوری آخری مراحل میں ہے جبکہ مزید سینکڑوں درخواستیں زیر التوا ہیں۔ اوگرا کے اس فیصلہ سے لاکھوں افراد بے روز گار ہو جائیں گے دوسری جانب حکومتی خزانہ اربوں روپے یومیہ کی آمدنی سے بھی محروم ہو جائے گا انہوں نے بتایا کہ ایل پی جی کی مجموعی کھپت میں سے 80 فیصد استعمال آٹو وہیکلز میں ہے جبکہ صرف 20 فیصد استعمال بطور گھریلو صارفین ہے آٹو میں 80 فیصد کھپت میں سے آدھی بڑی گاڑیوں میں ہیں ۔ اس فیصلہ کے باعث ملک کی ایل پی جی کی پیداوار کی رسد بڑھ جائے گی اور طلب میں انتہائی کمی ہو جائے گی جس کے باعث پہلے کی طرح ایل پی جی کو ضائع کرنا پڑے گا ۔ انہوں نے کہا کہ اس فیصلے سے لاکھوں گھروں کے چولہے بند ہو جائیں گے ۔انہوں نے کہا کہ ایل پی جی کو پوری دینا میں فرنیڈلی فیول تصور کیا جاتا ہے اور اس کے استعمال میں اضافہ کیا جا رہا ہے جبکہ ہماری حکومت اس کے استعمال پر پابندی لگا رہی ہے انہوں نے کہا کہ اوگرا نے یہ فیصلہ سی این جی مافیا کے کہنے پر کیا ہے جن کا اوگرا میں بہت اثر و رسوخ ہے انہوں نے کہا کہ ایل پی جی کے باعث لوگوں کو سستی ٹرانسپورٹ مہیا ہے اب حکومت بجلی و خوراک کے بعد لوگوں سے سستی سواری بھی چھین لینا چاہیتی ہے انہوں نے کہا کہ ایل پی جی سی این جی اور پٹرول کے مقابلہ میں قیمت کے حساب سے آدھی ہے اس کے باوجود بھی حکومت اس کو ختم کرنے پر تلی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس فیصلے کو کسی صورت میں قبول نہیں کریں گے اور لاکھوں افراد کو بے روز گار نہیں ہونے دیں گے انہوں نے کہا کہ ایسوسی ایشن کا اجلاس طلب کر لیا گیا ہے اس حوالے مشاورت کا عمل جاری ہے ۔

مزید :

صفحہ اول -