مونگ اور ماش کو جولائی کے آواخر تک کاشت کیاجاسکتاہے: ماہرین

مونگ اور ماش کو جولائی کے آواخر تک کاشت کیاجاسکتاہے: ماہرین

  

لاہور(کامرس رپورٹر)کاشتکار بارانی علاقوں میں مونگ اور ماش کو جولائی کے آواخر تک کاشت کر سکتے ہیں۔محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان کے مطابق مونگ کی کاشت کے لیے میَرا زمین موزوں ہے جبکہ کلراٹھی اور سیم زدہ زمین غیر موزوں ہے۔ آبپاش علاقوں کے لیے زرعی ماہرین کی سفارش کردہ اقسام نیاب مونگ 2006، ازری مونگ 2006اور نیاب مونگ 2011جبکہ بارانی علاقوں میں چکوال ایم۔6منظور شدہ اقسام ہیں۔ ان اقسام کے لیے شرح بیج 10سے 12کلو گرام فی ایکڑ استعمال کریں۔اسی طرح ماش کی ترقی دادہ اقسام چکوال ماش، ماش 97اور ماش عروج2011کاشت کریں۔

ان کی پیداواری صلاحیت 22من فی ایکڑ تک ہے۔زیادہ بارش والے علاقوں میں 8کلو گرام اور دوسرے علاقوں میں 10کلو گرام بیج فی ایکڑ استعمال کریں۔ اس طرح مونگ کی سفارش کردہ اقسام کے لیے شرح بیج 10 سے 12کلوگرام فی ایکڑ رکھیں۔ مونگ کی سفارش کردہ اقسام کی پیداوار ی صلاحیت 25من فی ایکڑ تک ہے۔اچھی پیداواری صلاحیت کی حامل ہونے کے ساتھ بیماریوں کے خلاف قوت مدافعت رکھنے وجہ سے زرعی ماہرین نے انہی اقسام کو کاشت کرنے کی سفارش کی ہے۔

مزید :

علاقائی -