پاکستان سے محبت کا جرم ،بنگلہ دیش کی عدالت نے ایک مسلم لیگی کو بھی پھانسی کی سزا سنا دی

پاکستان سے محبت کا جرم ،بنگلہ دیش کی عدالت نے ایک مسلم لیگی کو بھی پھانسی کی ...

  

 ڈھاکا(خصوصی رپورٹ) بنگلا دیش کی خصوصی عدالت نے مسلم لیگ کے سابق رہنماء اور سیاسی کارکن فرقان ملک کو بنگلا دیش کی مخالفت کرنے کے الزام میں موت کی سزا سنا دی ۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق 65 سالہ فرقان ملک کو شہریوں کے قتل اور جنسی زیادتی کا مجرم قرار دیا گیا ہے۔ استغاثہ کے وکیل نے میڈیا کو بتایا کہ 1971ء میں فرقان ملک جان بوجھ کر ان جرائم میں ملوث رہا خصوصا ہندو برادری کے ساتھ یہ ظلم روا رکھا گیا۔واضع رہے کہ فرقان ملک مسلم لیگ کے سابق رہنماء ہیں جنہوں نے 1971ء میں بنگلا دیش بننے کی شدید مخالفت اور مذمت کی تھی۔ انھیں گزشتہ سال حراست میں لیا گیا تھا۔ بنگلا دیش میں اب تک جماعت اسلامی سے تعلق رکھنے والے دو بزرگ رہنماؤں عبدالقادر مْلا اور محمد قمر الزامان کو پھانسی دی جا چکی ہے۔ جماعت اسلامی بنگلا دیش کی تیسری بڑی سیاسی جماعت مانی جاتی ہے لیکن اس کے باوجود ان کے رہنماؤں پر بنگلا دیش مخالفت کا الزام لگایا جاتا ہے۔ بنگلا دیش کی دیگر سیاسی جماعتیں اور انسانی حقوق کی تنظیموں کی جانب سے حکومت اور عدلیہ کے اس اقدام کو انتہائی تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -