این اے 118 دھاندلی کیس نادرا کی جانب سے فرانزک رپورٹ الیکشن ٹربیونل میں پیش

این اے 118 دھاندلی کیس نادرا کی جانب سے فرانزک رپورٹ الیکشن ٹربیونل میں پیش

  

 لاہور(نامہ نگار )حلقہ این اے 118دھاندلی کیس میں نادرا کی جانب سے فرانزک رپورٹ الیکشن ٹربیونل میں پیش کردی گئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق 3 ہزار 178 ووٹرز کے شناختی کارڈ زنا قابل تصدیق پائے گئے جبکہ 35ہزار 793کاؤنٹر فائلز کی تصدیق نہ ہو سکی ہے۔حلقہ این اے 118سے تحریک انصاف کے امید وار حامد زمان نے اس حلقہ سے مسلم لیگ (ن )کے ایم این اے ملک محمد ریاض کے خلاف انتخابی عذرداری دائر کررکھی ہے جس میں ملک ریاض پر دھاندلی کا الزام لگایا گیاہے ،درخواست گزار کی استدعا پر ریکارڈ کو تصدیق کے لئے نادرا بھجوا دیا گیا۔اس حوالے سے نادرا نے 724صفحات پر مبنی فرا نزک رپورٹ الیکشن ٹربیونل میں پیش کردی ہے ۔ رپورٹ کے مطابق 3 ہزار 278 شناختی کارڈ ز کی تصدیق نہیں ہوسکی ، ایک ہزار 282 بیلٹ پیپرز کی کاؤنٹر فائلز پر شناختی کارڈنمبر درج نہیں تھے جبکہ 745ووٹروں کے انگوٹھوں کے نشانات کی بھی تصدیق نہیں ہوسکی ،65ہزار 793بیلٹ پیپر ز کی کاؤنٹر فائلز کو نادرا کا اے ایف آئی ایف سسٹم شناخت نہیں کر سکا، الیکشن ٹریبونل نے نادرا رپورٹ کی نقول وکلاء کو بھجوا دی ہیں،الیکشن ٹربیونل نے کیس کی سماعت 3 اگست تک ملتوی کرتے ہوئے نادرا کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنید شوکت کو رپورٹ سے متعلق شہادت قلمبند کرانے کے لئے طلب کرلیا ہے ۔

فرانزک رپورٹ

مزید :

صفحہ آخر -