رینجرز پر پھرالزامات ، زرداری نے فوج کیساتھ ڈیل کرکے مجھے دھوکہ دیا، کڑے وقت میں ساتھ دیا تھا: الطاف حسین

رینجرز پر پھرالزامات ، زرداری نے فوج کیساتھ ڈیل کرکے مجھے دھوکہ دیا، کڑے وقت ...
رینجرز پر پھرالزامات ، زرداری نے فوج کیساتھ ڈیل کرکے مجھے دھوکہ دیا، کڑے وقت میں ساتھ دیا تھا: الطاف حسین

  

لندن (ویب ڈیسک) متحدہ قومی موومنٹ کے قائدالطاف حسین نے عسکری اداروں اور سربراہاں پر ایک مرتبہ پھر الزامات لگا دیے ہیں اور  کہا ہے کہ آصف زرداری کا کڑے وقت میں ساتھ دیا ،اُنہوں نے خود آرمی سے ڈیل کرلی اورہمارے ساتھ دھوکہ کیا،ایسے وقت میں ساتھ دیا جب خود پیپلزپارٹی کے رہنماﺅں نے اسے چھوڑدیاتھا۔

جناح گراﺅنڈ میں خدمت خلق فاﺅنڈیشن کے زیراہتمام سالانہ پروگرام سے ٹیلی فونک خطاب کرتے ہوئے الطاف حسین نے کہاکہ رینجرز نے مہاجروں کے خلاف اعلان جنگ کرکھا ہے،1947ءسے آج تک پاکستان میں فوج کی حکمرانی قائم رہی ہے، جمہوری حکومتوں کو بھی ا قتدار میں آنے کیلئے فوج کی حمایت حاصل کرنے کی ضرورت پیش آتی ہے۔ ایم کیو ایم نے بھی جنرل پرویز مشرف سے ہاتھ ملایا، 8 سال تک ان کےساتھ رہے، جب ہمیں عوام کی خدمت کا بھرپور موقع ملا تو ہم نے کراچی اور حیدر آباد کا نقشہ ہی بدل دیا۔ ایم کیو ایم ہر سال غریبوں، بیواﺅں، تیموں، مساکین ودیگر مستحقین کی امداد کیلئے ہر سال امدادی پروگرام کا انعقاد کرتی ہے، اس سلسلے میں زکوٰة، فطرہ ودیگر عطیات جمع کرتی ہے لیکن اس سال ڈی جی رینجرز بلال اکبر اور کور کمانڈر نوید مختار نے وزیراعظم نواز شریف، آپریشن کے کپتان سید قائم علی شاہ اور پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے ایما پر فیصلہ کیا کہ ایم کیو ایم اور اس کے فلاحی ادارے کے زکوٰة، فطرہ، صدقات و دیگر عطیات جمع نہ کرنے دیں ۔ ڈی جی رینجرز نے شاہی فرمان جاری کیا ہے کہ ایم کیو ایم کے سیکٹر انچارجز اور یونٹ انچارجز کو گرفتار کرلیا جائے گا، میں نے غیر قانونی اور غیر آئینی اقدامات کرنے والوں کے نام لئے تو کہا گیا کہ اب الطاف حسین فوجی افسروں کے نام لے رہا ہے۔ یہ کہاں کی شرافت ہے کہ فوجی افسران منتخب وزیراعظم کے کان پکڑ کر اقتدار سے نکال دیں لیکن جب غیر آئینی اور غیر قانونی حرکتیں کرنے والوں کا نام لیا جائے تو انہیں آگ لگ جاتی ہے۔

الطاف حسین نے بعض اینکر پرسنز اور تجزیہ نگاروں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ الزام لگاتے ہیں کہ 1992ءمیں دہشت گردوں کو مارنے والے پولیس افسران کو چن چن کر قتل کردیا گیا، ہم ہر ظلم و ستم کا بہادری سے سامنا کریں گے، ظالموں کے آگے اپنا سر ہرگز نہیں جھکائیں، انشاءاللہ نہ صرف بے گناہوں کے قاتلوں بلکہ ان کا ساتھ دینے والے اینکر پرسنز اور تجزیہ نگاروں سے قرآنی احکامات کے تحت قصاص اور دیت وصول کیا جائے گا۔ نواز شریف کو وزارت عظمیٰ سے ہٹایا گیا تو انہوں نے مسلح افواج کے خلاف ہرزہ رسائی کی، یہی عمل بے نظیر بھٹو نے بھی کیا اور حال ہی میں آصف علی زرداری نے فوج کے بارے میں کھلم کھلا کہا کہ وہ اینٹ سے اینٹ بجادیں گے، ان سے تمام فوجی ڈر کے بیٹھ گئے۔ ڈر اور خوف اس کے دل میں ہوتا ہے جس نے چوری کی ہو۔ انہوںنے پنڈال میں موجود افراد سے دریافت کیا کہ رینجرز نے میری رہائش گاہ نائن زیرو تو چھاپہ مارا لیکن آپ بتائیں کہ کیا انہوں نے آصف زرداری، میاں نواز شریف، عوامی نیشنل پارٹی، لشکر جھنگوی اور سپاہ صحابہ کے ہیڈکوارٹرز پر چھاپہ مارا؟ الطاف حسین نے پی ٹی آئی کے رہنماﺅں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ کو ایم کیو ایم کے خلاف جتنا زہر اگلنا ہے اگلیں لیکن وقت ایک جیسا نہیں رہتا۔ پاک فوج کے ٹاپ موسٹ لوگوں نے مجھ سے کہا تھا کہ ہم ایم کیو ایم سے غلط فہمیاں دور کرکے ہاتھ ملارہے ہیں، اگر وہ جرنیل اپنے وعدے میں سچے ہیں اور انہوں نے ہم سے سچا وعدہ کیا تھا تو وہ موجود جرنیلوں کو پیغام پہنچادیں کہ ہم پر ظلم و ستم کا سلسلہ بند کردیں۔

یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ الطاف حسین کی اس تقریر کے بعد رینجرز نے نائن زیروپر چھاپہ ماراہے اورگرفتاریاں بھی ہوئیں ، تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں۔

الطاف حسین نے کہا کہ میری کوشش ہوتی ہے عید کے موقع پر غریبوں کے بچے بھی نئے کپڑے پہن سکیں، وہ بھی سوئیاں کھا سکیں اور عید کی خوشیاں مناسکیں لیکن غریب و مستحقین کی مدد سے روکنے کیلئے رینجرز نے ہمیں زکوٰة فطرے کے عطیات جمع نہیں کرنے دئیے اور ہم پر مظالم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں، اس میں حکومت سندھ پوری طرح شریک ہے۔ آصف زرداری اور کرپٹ عناصر کا مک مکا پہلے بھی تھا اور آج بھی ہے۔ میں نے یہ سمجھا تھا کہ آصف زرداری واقعی پاکستان کے لئے کچھ کرنا چاہتے ہیں لیکن مجھے نہیں معلوم تھا کہ ان کا مقصد پاکستان کو بنانا نہیں بلکہ لوٹنا ہے۔

مزید :

کراچی -اہم خبریں -