بھارت میں انوکھا واقعہ، نوجوان لڑکی رکشہ ڈرائیور سے جنسی زیادتی کے الزام میں گرفتار

بھارت میں انوکھا واقعہ، نوجوان لڑکی رکشہ ڈرائیور سے جنسی زیادتی کے الزام میں ...
بھارت میں انوکھا واقعہ، نوجوان لڑکی رکشہ ڈرائیور سے جنسی زیادتی کے الزام میں گرفتار

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارت میں خواتین کی عصمت دری تو روز کا معمول بن چکی ہے لیکن اب مردوں کی عصمت دری کے واقعات بھی شروع ہوگئے۔

اخبار ’’ٹائمز آف انڈیا‘‘ کے مطابق دارالحکومت دہلی میں ایک خاتون کو ایک رکشہ ڈرائیور کی عزت پر حملہ کرنے کے الزام میں گرفتار کرلیا گیا ہے، جبکہ جنسی درندگی کرنے والی خاتون کی ساتھی، جو کہ ویڈیو بناتی رہی، فرار ہوگئی۔

انسپکٹر وشودھانند کے مطابق 32 سالہ خاتون رینولالوانی نے دہلی کے علاقے ساکیت سے رکشہ لیا اور ارجن نگر روانہ ہوگئی۔ منزل پر پہنچنے پر خاتون نے رکشہ ڈرائیور 41 سالہ امیش پرساد کو کرایہ دینے کے بہانے اپنے فلیٹ میں بلالیا۔ امیش نے پولیس کو بتایا کہ خاتون نے اسے ایک کمرے میں صوفے پر بٹھایا اور پانی کا گلاس پیش کیا۔ کچھ دیر بعد وہاں ایک اور جوان خاتون آگئی اور دونوں نے دروازہ لاک کردیا۔ رینو نامی خاتون نے امیش کو شراب پینے اور قابل اعتراض حرکات کرنے کی پیشکش کی۔ رکشہ ڈرائیور کا کہنا ہے کہ جب اس نے انکار کیا تو خاتون مشتعل ہوگئی اور زبردستی اس کی عزت پر حملہ کردیا۔ اسی دوران دوسری خاتون، جس کا نام جتیجا اور تعلق تنزانیہ سے بتایا گیا ہے، ویڈیو فلم بناتی رہی۔

مزید پڑھیں:بھارت کا جنسی جنونیوں سے بھرا گاﺅں

متاثرہ شخص کا کہنا ہے کہ جب ایک گھنٹے بعد دونوں خواتین کچھ صلاح مشورہ کرنے کیلئے دوسرے کمرے میں گئیں تو اس نے موقع پاکر کمرے کی کھڑکی سے باہر چھلانگ لگادی۔ اتفاق سے کمرہ فرسٹ فلور پر واقع تھا اور اس کی کھڑکی سے کودنے پر امیش کی ٹانگ ٹوٹ گئی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رینولالوانی کو گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ اس کی ساتھی خاتون کی تلاش جاری ہے، جس کے پاس واقعے کی ویڈیو بھی ہے۔ پولیس کو گھرکی تلاشی پرچار دیگر ڈرائیوروں کے لائسنس بھی ملے، جس کی بناء پر خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ دونوں خواتین اس سے پہلے بھی کئی ڈرائیوروں کو شکار بناچکی ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -