’اب اگر حج پر آنا ہو تو یہ کام ہر صورت اپنے ملک سے کرواکر آنا‘ سعودی حکومت نے اہم ترین ہدایات جاری کردیں

’اب اگر حج پر آنا ہو تو یہ کام ہر صورت اپنے ملک سے کرواکر آنا‘ سعودی حکومت نے ...
’اب اگر حج پر آنا ہو تو یہ کام ہر صورت اپنے ملک سے کرواکر آنا‘ سعودی حکومت نے اہم ترین ہدایات جاری کردیں

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) حج کے موقع پر دنیا بھر سے لاکھوں کی تعداد میں مسلمان سعودی عرب کا رخ کرتے ہیں اور اس موقعہ پر متعدی بیماریوں کے پھیلاﺅ کا خدشہ بھی موجود رہتا ہے۔ سعودی حکومت نے اس خطرے سے نمٹنے کے لئے دیگر متعدد اقدامات کے ساتھ حاجیوں کے لئے زکام اور گردن توڑ بخار کی ویکسین کا استعمال بھی لازمی قرار دے دیا ہے۔

ویب سائٹ البوابہ کی رپورٹ کے مطابق وزارت حج کی جانب سے مقامی زائرین پر زور دیاگیا ہے کہ وہ حج کے آغاز سے 10 دن قبل ہی ویکسین کا استعمال کرلیں جبکہ حج سروس فراہم کرنے والی تمام کمپنیوں سے بھی کہا گیا ہے کہ وہ اپنے تمام حاجیوں کی ویکسینیشن کو یقینی بنائیں۔

دبئی میں غلاف کعبہ کا ٹکڑا پونے چھ لاکھ ڈالر میں نیلام

ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ زکام اور گردن توڑ بخار ایک فرد سے دوسرے میں منتقل ہونے والی بیماریاں ہیں اور چونکہ حج کے موقع پر زائرین کی بہت بڑی تعداد اکٹھے قیام کرتی ہے لہٰذا ان بیماریوں کے پھیلاﺅ کا خدشہ بھی زیادہ ہوتا ہے۔ سعودی وزارت صحت کے مطابق گردن توڑ بخار آج کل بعض افریقی ممالک میں پھیل رہا ہے جبکہ مقامی اور بین الاقوامی طور پر انفلوئنزا کا وائرس بھی سرگرم پایا گیا ہے۔ اس صورتحال کے پیش نظر حاجیوں کے لئے ان بیماریوں کی ویکسین کا استعمال ازحد ضروری قرار دیا گیا ہے تاکہ سعودی عرب پہنچنے پر وہ دوسروں کے لئے بیماری کا سبب نہ بنیں۔

مزید :

عرب دنیا -