کوہاٹ میں 3 رکنی نقب زن گروہ گرفتار ،مال مسروقہ برآمد

کوہاٹ میں 3 رکنی نقب زن گروہ گرفتار ،مال مسروقہ برآمد

  

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) کوہاٹ بلی ٹنگ پولیس نے موبائل کی دکان لوٹنے والے تین رکنی نقب ذن گروہ کو گرفتار کرکے مسروقہ سامان برآمد کرلیا ہے۔ملزمان رات کی تاریکی میں بلی ٹنگ بازار میں واقع موبائل شاپ سے قیمتی سامان لوٹ کر موقع سے فرار ہوگئے تھے ،مقامی پولیس کی بروقت کاروائی کی بدولت واردات ناکام ہوئی اور لوٹا ہوا سامان برآمد کرکے گرفتار ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا۔ڈی ایس پی صدر سرکل حسین غلام بنگش نے ایس ایچ او تھانہ بلی ٹنگ مجاہد حسین حمزہ کے ہمراہ تھانہ بلی ٹنگ میں میڈیا بریفنگ کے دوران تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ15اور 16جولائی کی درمیانی رات نقب ذنی کی واردات کے دوران تین رکنی قبائلی گروہ بلی ٹنگ بازار میں واقع خان موبائل شاپ کے تالے توڑ کردکان سے موبائل فون سیٹس اور دیگر قیمتی سامان چوری کرکے لے گئے ۔واقعہ کی اطلاع مقامی پولیس کو دی گئی تو ایس ایچ او تھانہ بلی ٹنگ نے پولیس نفری کے ہمراہ جائے وقوعہ پر پہنچ کرمجرمان تک رسائی حاصل کرنے میں اہم ثابت ہونے والے شواہد قبضے میں لے لئے اوروقوعہ کے سر زد ہونے کے صرف دو گھنٹوں کے اندر واردات میں ملوث افراد کا کھوج لگاتے ہوئے بلی ٹنگ کی مقامی آبادی میں کامیاب کاروائی کے دوران قبائلی علاقہ درہ آدم خیل کے شیراکی قبیلہ سے تعلق رکھنے والے تین روپوش ملزمان شاہ ذیب ولد وزیر خان،لطیف ولد طاہر فاروق اور قاسم ولد واعظ میر کو گرفتار کرلیا ۔پولیس کی چھاپہ مار ٹیم نے گرفتار ملزمان کی نشاندہی پر مسروقہ سامان بھی برآمد کرکے قبضے میں لے لیاجن میں مجموعی طور پر 13عدد مختلف ماڈل کے موبائل فون سیٹس،17عدد موبائل بیٹریاں،21عدد موبائل فون سم،7عدد چارجرز،3عدد ہینڈ فری سیٹس،1عدد کولر فین،ایک عدد ٹیلی نار کمپنی کا بائیو میٹرک مشین ،ایک عدد ہائی پاور بنک اور 750روپے کی نقدی شامل ہیں۔ڈی ایس پی نے بتایا کہ گرفتار ملزمان کے خلاف تھانہ بلی ٹنگ میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے جنہوں نے پولیس کو دئیے گئے بیان میں اعتراف جرم کرلیا ہے اور انہیں مزید پوچھ گچھ کیلئے تفتیشی ٹیم کے حوالے کردیا گیا ہے۔ڈی ایس پی کا کہنا تھا کہ نقب ذنی کی اس واردات کو کمیونٹی پولیسنگ کی بدولت ناکام بنایا گیاکیونکہ نقب ذنوں کے خلاف کاروائی میں پولیس کو مقامی افراد کا تعاون بھی حاصل رہا۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ اپنے ارد گرد رونما ہونے والے جرائم پر کڑی نظر رکھ کر فوری طور پر اپنے مقامی پولیس کوآگاہ کرکے اپنی شہری ذمہ داری کو پوری کریں تاکہ علاقے میں امن و آشتی کی فضا ء برقرار رکھی جاسکے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -