کمانڈرز فوجی مشقوں کا کہہ کر لے گئے تھے،ترک باغی فوجی

کمانڈرز فوجی مشقوں کا کہہ کر لے گئے تھے،ترک باغی فوجی
کمانڈرز فوجی مشقوں کا کہہ کر لے گئے تھے،ترک باغی فوجی

  

انقرہ (نیوز ڈیسک)ترکی میں بغاوت کے دوران گرفتار ہونے والے فوجی اہلکاروں نے جب تفتیش کاروں کو سرکاری عمارتوں پر قبضہ کرنے کی وجہ بتائی تو وہ تفتیشی افسران بھی چکرا کر رہ گئے۔

برطانوی اخبار انڈیپنڈنٹ کے مطابق ترکی میں بغاوت کی کوشش میںناکام ہونے کے بعدہونے والی پیمانوں پر گرفتاریوں کے بعد جب زیر حراست اہلکاروں سے بغاوت کیلئے آنے کی وجہ پوچھی گئی تو انہو ں نے حیرت انگیز جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں پتہ ہی نہی تھا کہ ہم کسی ’ملٹری کو‘کیلئے جا رہے ہیں بلکہ ہمیں کمانڈرز کی جانب سے یہ بتایا گیا کہ بڑے پیمانے پر فوجی مشقیں کی جا رہی ہیں جس کے باعث ہم تمام تر کارروائی میں شامل نظر آئے۔

ایک اہلکار کا کہنا تھا کہ ہمیں صورتحال کی سنگینی کا اندازہ اس وقت ہوا جب عوام ٹینکوں پر چڑھ گئی اور اہلکاروں کو پیٹا۔

خیال رہے کہ ترک جمہوریت پر شب خون مارنے کی بڑی کارروائی کو ناکام بناتے ہوئے ترک پولیس اہلکاروں نے سینکڑوں باغی فوجیوں کو گرفتار کر لیا تھا۔گرفتار افراد کی تعداد 3000کے لگ بھگ بتائی جاتی ہے جن کے خلاف صدر اردوگان نے سخت کارروائی کا عندیہ دیاہے۔

مزید :

بین الاقوامی -