اسحاق ڈار ، سائرہ افضل ، اویس لغاری ، ملالہ کے والد کی شکایات پر پیمرا کے چینلز کو جرمانے

اسحاق ڈار ، سائرہ افضل ، اویس لغاری ، ملالہ کے والد کی شکایات پر پیمرا کے ...
اسحاق ڈار ، سائرہ افضل ، اویس لغاری ، ملالہ کے والد کی شکایات پر پیمرا کے چینلز کو جرمانے

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگولیٹری اتھارٹی پیمرا شکایات کونسل اسلام آباد کا 39 واں اجلاس چیئرپرسن شمیم ہمایوں کی زیر صدارت پیمرا ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد میں منعقد ہوا، پیمرا کونسل آف کمپلینٹس اسلام آباد نے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی شکایت کی سماعت کرتے ہوئے اے آر وائی نیوز کے 19 فروری 2016ءکے پروگرام ”لائیو و د شاہد مسعود “ میں بغیر ثبوت الزام تراشی کرنے اور اس کو ثابت نہ کرنے کی بنیاد پر آٹھ لاکھ روپے جرمانہ عائد کرنے اور انتباہ جاری کرنے کی سفارش کی ہے ۔ اے آر وائی کو 14 یوم کے اندر جرمانہ کی ادائیگی اور اسی پروگرام میں معذرت نشر کرنیکا حکم بھی جاری دیا گیا ہے ۔ فیصلے پر عملدرآمد نہ کرنے یا آئندہ ایسی غلطی دہرانے پر چینل کا لائسنس معطل کرنے کی سفارش بھی کی گئی ہے۔ کونسل نے ملالہ یوسفزئی کے والد ضیاالدین یوسفزئی کی اے آر وائی نیوز اور سچ ٹی وی کے کیخلاف شکایت کی سماعت کرتے ہوئے دونوں چینلز کو 8،8 لاکھ روپے جرمانہ عائد اور انتباہ جاری کرنے کی سفارش کی ہے۔ اس ضمن میں دیپ سعیدہ کی شکایت کا بھی کونسل نے جائزہ لیااور فریقین کا موقف سننے کے بعد جرمانے اور انتباہ جاری کرنے کی سفارش کی ہے ۔ جرمانے کی رقم 14 دن کے اندر جمع کرانے اور دونوں چینلز کو 14 دن کے اندر پرائم ٹائم میں معافی نشر کرنے کی ہدایت کی ہے ۔ کونسل نے چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے خارجہ امور اویس احمد لغاری کی سماءٹی وی کیخلاف شکایت پر چینل کو دولاکھ روپے جرمانہ ادا کرے اور 14 دن میں معافی نشر کرنے کا حکم دیا ہے۔ سماءٹی وی نے 11 مئی کی نشریات میں اویس لغاری کی ایک دہشت گرد گروپ کے ساتھ روابط سے متعلق بغیر ثبوت خبر دی تھی ۔ صدر ِ پاکستان کی بیماری سے متعلق خبر پر کونسل نے اے آر وائی نیوز کو جواب جمع کرانے کیلئے ایک ہفتہ کا وقت دیا ہے۔ ڈان نیوز کیخلاف بھی یہی شکایت تھی لیکن چینل نے معافی مانگ لی ہے ۔ کونسل نے اس کا فیصلہ اگلے اجلاس تک محفوظ کر لیا۔ کونسل نے چینل 24 کے 10 جون کے پروگرام ”کھرا سچ“ کیخلاف وزیراعظم کی صاجزادی مریم نواز کی شکایت کی سماعت چینل کی استدعا پر اگلے اجلاس تک ملتوی کر دی۔ پروگرام کے میزبان مبشر لقمان نے وزیراعظم پاکستان کے بیرونِ ملک علاج کے دوران ایک تصویر دکھا کر الزام لگا یا تھا کہ مریم نواز شریف حکومتی امور چلا رہی ہیں اور وفاقی سیکرٹریز کے ایک اجلاس کی صدارت کر رہی ہیں۔ شکایت کنندہ کے مطابق دکھائی گئی تصویر دو برس پرانی تھی۔ کونسل نے وزیر مملکت برائے صحت سائرہ افضل تارڈ کی اے آر وائی نیوز کے 21 جنوری کے پروگرام ”دی رپورٹر “ میں حفاظتی ویکسین کی خریداری میں بے ضابطگیوں اور مالی بدعنوانیوں سے متعلق بغیر ثبوت خبر چلانے کی شکایت پر چینل کو کونسل میں ثبوت پیش کرنے کیلئے پندرہ دن کا وقت دیا ہے۔

مزید :

اسلام آباد -