جلالپور میں قتل و غارت‘ 8 ملزموں کا مزید 3 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

جلالپور میں قتل و غارت‘ 8 ملزموں کا مزید 3 روزہ جسمانی ریمانڈ منظور

  

 ملتان (خبر نگارخصو صی)انسدادِ دہشت گردی کی خصوصی عدالت ملتان نمبر 2 کے جج راؤ محمد سلیم نے عید الفطر کے روز مقدمہ بازی کے تنازعہ میں کلاشنکوف سے فائرنگ کرکے متعدد افراد کو قتل  اور زخمی کرنے سمیت علاقہ میں خوف و ہراس پھیلانے کے مقدمہ میں ملوث 8 ملزمان کا مزید تین روزہ جسمانی (بقیہ نمبر52صفحہ7پر)

ریمانڈ منظور کرنے کا حکم دیا ہے۔فاضل عدالت میں پولیس تھانہ صدر جلال پور پیر والا کے مطابق ملزمان خرم شہزاد، محمد اظہر، غلام جعفر، جواد حسین، محمد حنیف، محمد سلیم اختر،غلام یاسین اور نذر عباس کے خلاف اختر عباس نامی شہری نے مقدمہ درج کرایا کہ وہ 5 جون 2019 کو جلال پور پیر والا کے نواحی علاقے میں موجود بستی کی مرکزی عیدگاہ میں نماز ادا کرنے کے لیے گیا جس وقت اس کے ساتھ طاہر، ممتاز عرف کالا، عاقب جاوید، سلیم اختر،راحت عباس، عصمت اللہ، شوکت علی، محمد شفقت، الطاف، معراج، ساجد، اظہر، امجد، ساجد،سیف اللہ، سمیع اللہ، حسنین،عامر، اللہ ڈتہ، الیاس اور آفتاب ہمراہ تھے جب وہ نماز ادا کرکے کے اپنی گلی کے سامنے پہنچے تو مذکورہ ملزمان جو کہ کسی شخص کے ڈیرہ پر چھپے ہوئے تھے ہمارے وہاں پہنچنے پر سامنے آگئے اور کلاشن کوف سے اندھا دھند فائرنگ شروع کردی جس پر یہ مذکورہ افراد شدید زخمی ہوگئے اور کئی ہسپتال جاتے ہوئے جانبحق بھی ہوئے۔ملزمان کے ساتھ وجہ عناد یہ کہ متاثرہ افراد کے ساتھ ملزمان کی مقدمہ بازی چل رہی تھی اور ایک شخص کو قتل کرنے کی کوشش کرنے کا مقدمہ زیر دفعہ 324 درج کروانے پر ایک دوسرے کے خلاف سازشیں کی جارہی تھی جس پر یہ معاملہ عید کے روز نیا رخ اختیار کر گیا اور اندھا دھند فائرنگ سے کئی افراد کا قتل ہوا جس پر ملزمان کے خلاف دہشت گردی، قتل، اقدام قتل اور دیگر کئی دفعات کے تحت مقدمہ کا اندراج کیا گیا ہے ملزم سے تفتیش اور برآمدگی ہونی باقی ہے اس لیے ملزمان کا جسمانی ریمانڈ منظور کرنے کا حکم دیا جائے۔َ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -