تیزاب گردی قتل سے بڑا جرم ،ملزم کسی رعایت کے مستحق نہیں ،قائمقام چیف جسٹس مامون رشید شیخ

  تیزاب گردی قتل سے بڑا جرم ،ملزم کسی رعایت کے مستحق نہیں ،قائمقام چیف جسٹس ...

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)قائم مقام چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے کہا ہے تیزاب گردی کے ملزم کسی بھی(بقیہ نمبر20صفحہ12پر )

قسم کی رعایت کے مستحق نہیں ہوسکتے ۔ بلاشبہ تیزاب گردی قتل سے بڑا جرم ہے کیونکہ قتل ہونے والا ایک دفعہ مرتا ہے لیکن تیزاب گردی کا شکار روزانہ کئی مرتبہ مرتا ہے ،پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں تیزاب کی خرید و فروخت کے لئے قوائد و ضوابط کےلئے قانون سازی کے حوالے سے ایک روزہ مشاورتی ورکشاپ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے قائم مقام چیف جسٹس نے مزید کہا کہ چیف جسٹس پاکستان مسٹرجسٹس آصف سعید خان کھو سہ کے تیزاب گردی کے ایک کیس میں حالیہ ریمارکس بہت اہمیت کے حامل ہیں ،تیزاب گردی کے ملزمان کسی بھی قسم کی رعایت کے مستحق نہیں ہوسکتے ۔ بلاشبہ تیزاب گردی قتل سے بڑا جرم ہے کیونکہ قتل ہونے والا ایک دفعہ مرتا ہے لیکن تیزاب گردی کا شکار روزانہ کئی مرتبہ مرتا ہے ۔ قائم مقام چیف جسٹس نے کہا کہ بازار میں تیزاب کی عام فروخت اور آسان دستیابی باعث تشویش ہے ۔ گھروں میں استعمال ہونے والا عام تیزاب بھی بہت خطرناک نوعیت کا ہوتا ہے ۔ جسٹس مامون رشید شیخ کا کہنا تھا کہ تیزاب گردی کے شکار متاثرین خصوصا خواتین کو معاشرے کی خاص توجہ کی ضرورت ہوتی ہے ۔ ان کے جسمانی علاج کے ساتھ ساتھ ذہنی کونسلنگ بھی ضروری ہے، تیزاب گردی کا شکار خواتین بری طرح احساس کمتری اور خوف میں جکڑی جاتی ہیں جنہیں اس سارے فیز سے نکالنے کےلئے پورے معاشرے اور ہمارے قانون نافذ کرنے والے اداروں پر بہت اہم ذمہ داری عائد ہوتی ہے ۔ قائم مقام چیف جسٹس مامون رشید شیخ نے ورکشاپ کے شرکاء میں اسناد بھی تقسیم کیں ۔ تقریب میں قائم مقام رجسٹرار لاہور ہائی کورٹ اشترعباس، ڈائریکٹر جنرل پنجاب جوڈیشل اکیڈمی عبدالستار اور ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج ساجد علی اعوان سمیت جوڈیشل افسران اور انسانی حقوق کی تنظیموں کے نمائندوں نے شرکت کی ۔

تیزاب گردی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -