جج کی ویڈیو پاکستان کی سیاسی تاریخ میں ایک سیاہ دھبہ ہے،لطیف کھوسہ

جج کی ویڈیو پاکستان کی سیاسی تاریخ میں ایک سیاہ دھبہ ہے،لطیف کھوسہ

  

اسلام آباد(صباح نیوز) پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما لطیف کھوسہ نے کہا ہے کہ جج ارشد ملک لڑکی نہیں تھے جو 6ماہ بعد کہتی ہے مجھے پستول دکھا کر اغوا کیا گیا۔ جج کی ویڈیو پاکستان کی سیاسی تاریخ میں ایک سیاہ دھبہ ہے۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کر تے ہوئے لطیف کھوسہ نے کہا کہ جج کی ویڈیو پاکستان کی سیاسی تاریخ میں ایک سیاہ دھبہ ہے اور مجھے امید ہے کہ چیف جسٹس پاکستان نظام عدل پر لوگوں کا اعتماد بحال کریں گے۔انہوں نے کہا کہ اگر ملزمہ نے ویڈیو پیش کی ہے تو اس میں کوئی قباحت نہیں، جو فیصلہ ہوجائے اس پر تنقید اور پریس کانفرنس بھی ہو سکتی ہے۔پیپلزپارٹی رہنما نے کہا کہ سارا کیس سپریم کورٹ کے جج کی نگرانی میں چل رہا تھا ارشد ملک کو چا ہیے تھا کہ نگران جج کو مطلع کرتے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ویڈیو اصلی ثابت ہوگئی تو جج کا بیان حلفی کی حیثیت ختم ہوجاتی ہے۔پاکستان کی معاشی صورتحال پر بات کرتے ہوئے لطیف کھوسہ نے کہا کہ موجودہ حکومت دو بڑی غلطیاں کر چکی ہے جن کے نتائج مستقبل میں بھگتنے ہوں گے۔

ملک کی معاشی صورتحال دیگر گوں ہے اور اپوزیشن ایک مشترکہ لائحہ عمل کی دعوت بھی دے چکی ہے لیکن حکومت کے ساتھ مسئلہ یہ ہے کہ انہوں نے دعوے بہت بڑے کیے ہیں۔لطہف کھوسہ کا کہنا تھا کہ صاحب اقتدار طبقے نے آئی ایم ایف کے پاس جانے میں غلطی اور دوسری بڑی غلطی اپنی معاشی ٹیم کو فارغ کرنا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ ہماری موجودہ حکومت بہت معصوم ہے اور اس نے اپنی معاشی و ریاستی خومختاری آئی ایم ایف کے سپرد کر دی ہے۔

لطیف کھوسہ

مزید :

علاقائی -