مذاکرات کا لالی پاپ، ہڑتال سے بچنے کی پالیسی، حکومت تاجر گروپوں کو ”توڑنے“ میں کامیاب 

  مذاکرات کا لالی پاپ، ہڑتال سے بچنے کی پالیسی، حکومت تاجر گروپوں کو ...

  

لاہور(دیبا مرز ا سے)حکومت صوبائی دارلحکومت کے تاجروں کو تقسیم کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے اور اس وقت لاہور بھر کے تاجروں کے نمائندے مختلف دھڑوں میں تقسیم ہو کررہ گئے ہیں جس کی وجہ سے تاجروں کے حکومت کے ساتھ مذاکرت بھی سود مند ثابت نہیں ہو پارہے ہیں۔تفصیلات کے مطابق 13جولائی بروز ہفتہ کو آل پاکستان انجمن تاجران کی کال پر ملک بھر میں ہونے والی ہڑتال کے نتیجے میں تاجروں کے وہ گروپ جو کہ حکومت کے ساتھ آخری وقت تک مذاکرت کررہے تھے اور اس وجہ سے انہوں نے اپنی تاجر برادری کا ہڑتال میں ساتھ دینے کی بجائے اس دوران ہڑتال کی مخالفت بھی کی تھی اور کہا تھا کہ ہم حکومت سے مذاکرت کریں گے اور کوشش کریں گے کہ ہڑتال کی ضرورت ہی پیش نہ آئے اور اس حوالے سے تاجروں کے لاہور کے جو بڑے گروپ جن میں خالد پرویز اور مجاہد مقصود بٹ حکومت کی مذاکرتی ٹیم کے ساتھ مسلسل رابطے میں تھے وہ حکومتی لالی پاپ کے نتیجے میں آخری وقت تک کشمش کا شکار رہے کہ ان کو کیا کرنا چاہئے لیکن صورتحال کو دیکھتے ہوئے خالد پرویز نے جمعہ کی رات گئے اپنے تاجر برادری کی ہڑتال کا ساتھ دینے کااعلان کیا لیکن اس ایشو پر انہوں نے اپنے ساتھ حکومت سے بات چیت کرنے والے تاجروں کے نمائندے مجاہد مقصود بٹ کو اس حوالے سے اعتماد میں نہیں لیا اور اکیلے ہی تاجروں کے ساتھ یکجہتی کرتے ہوئے ان کی ہڑتال میں ان کا ساتھ دینے کااعلان کردیا لیکن ساری صورتحال سے انہوں نے اپنے اس ساتھی کو مکمل طور پر لا علم رکھا جو اس دوران میڈیا کو بھی جواب دینے سے قاصر رہے۔اعتماد میں نہ لینے کے فیصلے پر مجاہد مقصود بٹ ان سے ناراض بھی ہو گئے ہیں اور اب انہوں نے اپنا ایک الگ گروپ بھرپور طریقے سے فعال کرنا شروع کردیا ہے اورا س حوالے سے انہوں نے اپنے ہم خیال تاجروں سے رابطوں کا سلسلہ بھی شروع کردیا ہے،ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ مجاہد مقصود بٹ حکومت وقت کے ساتھ کسی بھی کشیدگی کی صورتحال پیدا کرنے کی بجائے افہام و تفہیم کے ساتھ آگے بڑھنا چاہتے ہیں وہ چاہتے ہیں کہ ہڑتال بھی نہ کرنی پڑی اور تاجروں کے مطالبات کو بھی مان لیا جائے اس طرح سے اگر یہ کہا جائے کہ لاہور کے انجمن تاجران میں آنے والے دنوں میں گروپ بندیوں کا سلسلہ بڑھے گا تو یہ بھی بے جا نہ ہو گا۔ حکومت کے ساتھ لاہور کی تاجر برادری کے قابل ذکر دھڑوں میں قومی تاجر اتحاد جس کی نمائندگی عنصر ظہور بٹ اور زاہد میر وغیرہ کرتے ہیں وہ بھی مسلسل حکومت کے ساتھ رابطے میں رہے جبکہ صدر محمد اشرف بھٹی اور نعیم میر گروپ مسلسل ہڑتال پر قائم رہے لیکن حکومت کی جانب سے پی ٹی آئی تاجر ونگ کے نمائندے ملک زمان نصیب اور شبیر سیال ان میں گروپ بندی کروانے میں کامیاب ر ہے جبکہ نذیر چوہان نے بھی اس حوالے سے اہم کردار ادا کیا اور صوبائی وزیر تجارت میاں اسلم اقبال بھی ابھی تک تاجروں کے ساتھ رابطے میں ہیں اور ان کی کوشش ہے کہ آئندہ ہڑتال کی نوبت نہ آئے۔ 

تاجر تقسیم 

مزید :

صفحہ اول -