کراچی، ٹرانسپورٹ مافیا کی جانب سے بسوں کو چز کے کرائے میں من مانا اضافہ

  کراچی، ٹرانسپورٹ مافیا کی جانب سے بسوں کو چز کے کرائے میں من مانا اضافہ

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)شہرِ قائد میں ایک پھر ٹرانسپورٹ مافیا نے من مانی کرتے ہوئے فی اسٹاپ کرائے میں یک دم 10تا  20روپے کا اضافہ کرتے ہوئے کم از کم کرایہ25اور زیادہ سے زیاد ہ کرایہ 50روپے فی مسافر مقرر کردیا ہے اور زائد کرایہ ادا نہ کرنے والے مسافروں کے ساتھ بد تمیزی و بسوں سے اتارنے کی شکا یات بھی سامنے آرہی ہیں جبکہ اردو املا کی اغلاط سے بھرپور کرائے کی جعلی فہرستیں بسوں و کوچز کے ونڈ اسکرین پر آویزاں کردی گئی ہے۔حکومت کی جانب سے کسی قسم کا اعلامیہ جاری ہونے سے قبل ہی شمع کوچ، F-11، داتا کوچ، W-11، 17-J،  S-2، W-21سمیت شہر میں چلنے والی بیشتر بسوں کے کرائے میں ہائی اسپیڈ ڈیزل اور سی این جی کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کو جواز بناتے ہوئے فی مسافر کرائے میں اضافہ کیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ پچھلے سال جولائی2018  میں ڈیزل کے فی لیٹر نرخ میں اضافے کو جواز بناتے ہوئے 13روپے فے مسافر کا اضافہ گیا تھا۔نئے نرخ نامے کے مطابق کم از کم کرایہ 25روپے اور زیادہ سے زیادہ کرایہ 45تا 50روپے مختص کیا گیا ہے جبکہ اس سے قبل کم از کم کرایہ 15روپے اور زیادہ سے زیادہ کرایہ 30روپے تھا۔ سخی حسن تا فی ٹی سی فلائی اوور سفر کرنے والے مسافر وں کے مطابق شمع کوچ و F-11روٹ کی بسیں فی مسافر10تا 20روپے زائدکرایہ وصول کررہی ہیں جبکہ خواتین، بچوں و بزرگوں سمیت زائد کرایہ ادا نہ کرنے والے مسافروں کو بسوں سے اتارا جارہا ہے۔ مسافر وں کے مطابق بسوں سے سفر ان کی مجبوری ہے جس کا ناجائز فائدہ اٹھایا جارہا ہے ااور موجودہ اضافہ نگراں حکومت و ٹرانسپورٹ کے ذمہ دار حکام کی بے بسی اور ساکنانِ شہرِ قائد کی ٹرانسپورٹ مافیا کے ہاتھوں کئی دہائیوں سے یر غمال ہونے کا کا تازہ ترین منہ بولتا ثبوت ہے۔

مزید :

صفحہ اول -