یونیورسٹی آف ملاکنڈ کے وائس چانسلر کی تقرری کو چیلنج کردیا گیا

یونیورسٹی آف ملاکنڈ کے وائس چانسلر کی تقرری کو چیلنج کردیا گیا

  

پشاور(نیوزرپورٹر)یونیورسٹی آف ملاکنڈ کے وائس چانسلر کی تقرری کو پشاور ہائی کورٹ میں چیلنج کردیا گیا ہے،اس حوالے سے رٹ پٹیشن پشاور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے نائب صدر علی زمان ایڈوکیٹ کیجانب سے ملک محمد اجمل خان ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائر کی گئی ہے جس میں چیئرمین ہائیر ایجوکیشن کمیشن آف پاکستان،صوبائی حکومت، ڈی جی نیب اوروائس چانسلر یونیورسٹی آف ملاکنڈ ڈاکٹر گل زمان کو فریق بنایاگیا ہے، رٹ میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ وائس چانسلر کی آسامی کیلئے اہل امیدواروں کو نظرانداز کرکے ڈاکٹر گل زمان کو غیرقانونی طور پرلیا گیا ہے جبکہ متعلقہ عہدے کیلئے وہ مقررہ اہلیت پرپورا نہیں اترتے کیونکہ اس وقت وہ سلیکشن بورڈ کے چیئرمین تھے اور ان کی پرسنل پروموشن زیرغورتھی اور انہیں مبینہ طور پر غیرقانونی طور پر12 فروری 2018کو پروفیسر کے عہدے پر ترقی دی گئی، رٹ کے مطابق جس اتھارٹی کیجانب سے تقرری کی گئی ہے وہ اسکی مجاز نہیں تھی۔ رٹ میں نیب سے مبینہ غبن اور اختیارات کے ناجائزاستعمال پرانکوائری کرانے اور اس حوالے سے ریفرنس عدالت میں جمع کرنے کی درخواست کی گئی ہے،رٹ میں استدعا کی گئی ہے کہ آئین کے آرٹیکل 199(1) (b) کے تحت عدالت کیجانب سے بغیر کسی تاخیرملاکنڈ یونیورسٹی کے وائس چانسلر کے ایک اہم عہدے پر تعیناتی کے پورے مرحلے کا جائزہ لیاجائے۔اس حوالے سے سماعت 23جولائی کو ہوگی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -