کمپیوٹر سسٹم خرابی نے11 ہزار افرا دکوایمنسٹی سکیم سے فائدہ نہیں اٹھانے دیا‘رِٹبا

کمپیوٹر سسٹم خرابی نے11 ہزار افرا دکوایمنسٹی سکیم سے فائدہ نہیں اٹھانے ...

  

راولپنڈی(این این آئی)راولپنڈی اسلام آباد ٹیکس بار ایسوسی ایشن (رِٹبا)کے صدر سید توقیر بخاری نے کہا ہے کہ ایف بی آر کے آن لائن پورٹل میں آٹھ گھنٹے کی خرابی کی وجہ سے تقریباً گیارہ ہزار افراد کوشش کے باوجود حالیہ ایمنسٹی سکیم سے فائدہ نہیں اٹھا سکے ہیں جنھیں فوری ریلیف فراہم کیا جائے۔ حکومت کی جانب سے ٹیکس نیٹ میں اضافہ کی کوششیں قابل قدر ہیں جس سے بالواسطہ ٹیکس کا تناسب جو اس وقت تقریباً ساٹھ فیصد ہے کو کم کرنے میں مدد ملے گی۔سید توقیر بخاری نے رِٹباکی جانب سے فنانس ایکٹ2019 کے بارے میں منعقدہ ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اِن ڈائریکٹ ٹیکس پر انحصار کم کیا جائے اور ڈائریکٹ ٹیکس پر فوکس بڑھایاجائے تاکہ عوام پر ٹیکس کا بوجھ اور ملک میں مہنگائی کم کی جا سکے۔انھوں نے کہا کہ ڈائریکٹ ٹیکس سے مہنگائی اور غربت کم، معیشت متوازن اور ملکی ترقی کی رفتار بڑھ جائے گی۔ اگر پوٹینشل کے مطابق ٹیکس وصول کیا جائے تو پاکستان کو غیر ملکی امداد کی ضرورت نہیں رہے گی۔سیمینار سے چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ حبیب فخر الدین، ٹیکس ماہر حافظ محمد ادریس اور دیگر ماہرین نے بھی خطاب کیا۔

انھوں نے کہا کہ آئین میں ترمیم کر کے زرعی آمدنی پر انکم ٹیکس لگایا جائے جو ایف بی آر وصول کرے تو جی ڈی پی کا حجم بڑھ جائے گا اورملکی معیشت میں انقلاب آ جائے گا۔وفاق کے پاس ٹیکس جمع کرنے کا مناسب نظام موجود ہے جبکہ صوبے اس ضمن میں مسائل کا شکار ہیں۔ انھوں نے حاضرین کو سیلز ٹیکس اورانکم ٹیکس کے قوانین میں تبدیلیوں سے آگاہ کیااور کئی ترامیم کو گنجلک قرار دیتے ہوئے حکومت سے انکی فوری وضاحت کا مطالبہ کیا تاکہ ٹیکس گزاروں کا کنفیوژن دور کیا جا سکے۔ ٹیکس ماہرین نے سوال جواب کے وقفہ میں حاضرین کے سوالات کے تفصیلی جوابات بھی دئیے۔سیمینار کے اختتام پرچئیرمین اپیلٹ ٹریبونل ان لینڈ ریوینو شاہد مسعود منظر نے بھی تقریب میں شرکت کی،جوڈیشل سسٹم پر اظہار خیال کیا اور مقررین میں یادگاری شیلڈز تقسیم کیں۔ اس موقع پر رِٹباکے سئنئیر نائب صدر فراز فضل شیخ، نائب صدر نعیم الحق، جنرل سیکرٹری زاہد شفیق اور جائنٹ سیکرٹری صوفیہ اختر بھی موجود تھیں۔

مزید :

کامرس -