قبائلی اضلاع کی ترقی پر بھرپورتوجہ مرکوزرکھے ہوئے ہیں ، ضیاءاللہ بنگش

قبائلی اضلاع کی ترقی پر بھرپورتوجہ مرکوزرکھے ہوئے ہیں ، ضیاءاللہ بنگش

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)وازیر ا علیٰ خیبرپختونخواکے مشیر تعلیم ضیاءاللہ بنگش نے کہاہے کہ قبائلی اضلاع پر بھرپور توجہ دے رہے ہیں، اس حوالے سے وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ محمود خان کی خصوصی ہدایات ہیں۔ انہوں نے کہاکہ انڈپینڈنٹ مانیٹرنگ یونٹ کی رپورٹ کو مدنظر رکھتے ہوئے رواں مالی سال بجٹ میں قبائلی اضلاع کے لیے تعلیمی شعبے میں 36 ارب روپے فنڈ مختص کے گئے ہیں اورقبائلی اضلاع کے سکولوں کو مزید بہتر اور تعلیمی معیار مزید بہتر بنانے کے حوالے سے اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں۔یہ بات انہوں نے ضم شدہ اضلاع میں انڈپینڈنٹ مانیٹرنگ یونٹ کے حوالے سے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں پروجیکٹ ڈائریکٹر ضیاءالحق، ایڈیشنل پروجیکٹ ڈائریکٹر عابد اللہ، ڈپٹی ڈائریکٹر اسد سرور اور انڈپینڈنٹ مانیٹرنگ یونٹ محکمہ تعلیم کے آفیسرز نے شرکت کی۔ اس موقع پر انڈپینڈنٹ مانیٹرنگ یونٹ کی جانب سے قبائلی اضلاع کے سکولوں کی مانیٹرنگ کے حوالے سے جاری کی گئی مانیٹرنگ رپورٹ پر تفصیلی گفتگو کی گئی۔ رپورٹ میں کہاگیاہے کہ آئی ایم یو کی جانب سے5889 سکولوں میں سے 5788 سکولوں کی مانیٹرنگ کی گئی ہے ۔رپورٹ کے مطابق قبائلی اضلاع کے 98 فیصد سکولوں کی مانیٹرنگ مکمل ہوگئی ہے جبکہ 2 فیصد سکولوں کی مانیٹرنگ سیکیورٹی وجوہات کی بناءپر نہ ہو سکی جو جلد کی جائے گی۔رپورٹ کے مطابق قبائلی اضلاع میں اساتذہ کی حاضری 82 فیصد رہی اور غیرحاضری 18 فیصد۔طلباءکی حاضری 62 فیصد رہی۔ رپورٹ کے مطابق 45 فیصد سکولوں میں بجلی کی سہولت موجود جبکہ 55 فیصد سکولوں میں بجلی کی سہولت موجود نہیں اور49 فیصد سکولوں میں پانی کی سہولت موجود جبکہ 51 فیصد سکولوں میں پانی کی سہولت موجود نہیں۔70 فیصد سکولوں میں ٹائلٹ کی سہولت موجود جبکہ 30 فیصد سکولوں میں ٹائلٹ کی سہولت موجود نہیں، آئی ایم یو کے رپورٹ میں کہاگیاہے کہ 82 فیصد سکولوں میں باونڈری وال کی سہولت موجود جبکہ 18 فیصد سکولوں میں باونڈری وال کی سہولت موجود نہیں۔ اسی طرح غیرتدریسی عملے کی حاضری 74 فیصد جبکہ غیرحاضری 26 فیصد رہی۔اس موقع پرگفتگوکرتے ہوئے ضیاءاللہ بنگش نے کہاکہ قبائلی اضلاع کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے فوری بعد انڈپینڈنٹ مانیٹرنگ یونٹ کو قبائلی اضلاع تک توسیع دی گئی ہے۔ انہوں نے اس عزم کا اظہارکیاکہ انڈپینڈنٹ مانیٹرنگ یونٹ کی رپورٹ کو مدنظر رکھتے ہوئے قبائلی اضلاع کے تمام سکولوں میں بنیادی سہولیات کی فراہمی یقینی بنائی جائیگی۔

پشاور(سٹاف رپورٹر)وازیر ا علیٰ خیبرپختونخواکےمشیر تعلیم ضیاءاللہ بنگش نے کہاہے کہ نوجوانوں کو فیصلہ سازی کے عمل میں بااختیار بنانے اوران کو مستقبل کے چیلنجز سے نمٹنے کیلئے موجودہ صوبائی حکومت بہترین راہنمائی فراہم کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ آج کے نوجوانوں نے کل اس ملک کی باگ دوڑ سنبھالنی ہے۔ اس لئے ان کو بھی اپنی ذمہ داریوں کے بطریق احسن نبھانا چاہئےے۔ وہ پشاور کے مقامی ہوٹل میں فلاحی ادارے کی طرف سے شروع کردہ پروگرام وش۔ٹو۔ایکشن کے لانچنگ پروگرام سے خطاب کررہے تھے۔ جس سے صوبائی وزیرصحت ڈاکٹر ہشام انعام اللہ خان، سیکرٹری پاپولیشن ، اصغرعلی ، گوہرزمان، مہتاب اکبر راشدی، سیدکمال شاہ اور انجم رضوی نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر ممبران صوبائی اسمبلی ،شعبہ صحت اورسماجی اداروںسے تعلق رکھنے والے افراد بھی موجودتھے۔ ضیاءاللہ خان بنگش نے اپنے خطاب میں ادارے کی کارکردگی کو سراہا اور نئے شروع کردہ پروگرام میں حکومت کی طرف سے بھرپور معاونت فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ انہوں نے کہاکہ حکومت فلاحی اداروں کی طرف سے شروع کردہ منصوبوں کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت نے اپنی طرف سے بھی عوامی فلاح وبہبود کے کثیرالمقاصد منصوبے شروع کررکھے ہیں جن کا بنیادی مقصد عوام کے مسائل ان کی دہلیز پر حل کرناہے۔

مزید :

صفحہ اول -