غیر ملکی فضائی کمپنیوں کے96 پائلٹ کلیئر، امریکہ کی پابندی!

غیر ملکی فضائی کمپنیوں کے96 پائلٹ کلیئر، امریکہ کی پابندی!

  

سول ایوی ایشن اتھارٹی نے پاکستانی پائلٹوں کے لائسنسوں کی تحقیق کے بعد مزید96 پائلٹوں کے لائسنس درست اور جائز قرار دے دیئے ہیں۔ یہ سب غیر ملکی ایئر لائنز میں خدمات انجام دے رے ہیں کہ ہمارے وزیر ہوا بازی کی طرف سے جعلی لائسنسوں کے اعلان کے بعد ان کو متعلقہ ایئر لائنز کمپنیوں نے گراؤنڈ کر دیا تھا۔ اب ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن نے متعلقہ حکومتوں اور ہوائی کمپنیوں کو خط تحریر کر کے اطلاع دی کہ یہ پائلٹ کلیئر ہو گئے ہیں۔ یہ پائلٹ ہانگ کانگ، متحدہ عرب امارات، ملائشیا، بحرین، ترکی، ویت نام اور دیگر ممالک کی فضائی کمپنیوں سے منسلک تھے، اس وضاحتی خط کے بعد ہی متعلقہ کمپنیاں ان پائلٹوں کے بارے میں فیصلہ کریں گی۔دریں اثناء امریکہ کی وفاقی سول ایوی ایشن نے پاکستان ایئر لائنز کی درجہ بندی کم کر کے اسے درجہ دوم کی فہرست میں ڈال دیا ہے۔ اس کے مطابق پاکستان کی فضائی کمپنیاں حفاظت کے معیار پر مکمل طور پر پورا نہیں اُترتیں۔امریکی سوی ایوی ایشن حکام کے اس بڑے فیصلے کے بعد پاکستان کی فضائی کمپنیوں کا امریکہ میں آپریشن بہت محدود ہو گیا ہے اور اب یہ فضائی کمپنیاں، امریکی کمپنیوں کے ساتھ فضائی معاہدے بھی نہیں کر سکیں گی، ہمارے وزیر ہوا بازی کے بیان کے اثرات اب تک محسوس کئے جا رہے ہیں اور ان کی طرف سے ڈھائی سو سے زائد پائلٹوں کے لائسنس مبینہ طور پر جعلی قرار دینے سے پاکستانی پائلٹ اور دوسرے تکنیکی ماہر زد میں آئے تھے، اس سے بدنامی الگ ہوئی، جو اب بھی جاری ہے۔ اسی حوالے سے ماہرین کا کہنا ہے کہ بیان سے پہلے تحقیق مکمل کر لینا چاہئے تھی۔اگر بولنے سے پہلے تول لیا ہوتا تو یہ نہ ہوتا۔

مزید :

رائے -اداریہ -