فواد چوہدری سے آل پاکستان پرائیویٹ سکولز کے وفد کی ملاقات

فواد چوہدری سے آل پاکستان پرائیویٹ سکولز کے وفد کی ملاقات

  

 ایبٹ آباد (ڈسٹرکٹ رپورٹر)آل پاکستان پرائیویٹ سکولز مینیجمنٹ ایسوسی ایشن کے تیرہ رکنی وفد نے ابرار احمد خان ڈویژنل پریزیڈنٹ راولپنڈی اور ملک افتخار حسین کی قیادت میں وفاقی وزیر برائے سائنس اور ٹیکنالوجی فواد حسین چوہدری سے ملاقات کی۔سکولوں کے کھولنے کے حوالے سے ایک چودہ نکاتی ایجنڈے پر بات چیت کی گئی۔ وفد نے وزیر موصوف سے نجی اداروں کو ایس او پیز کے ساتھ کھولنے کے لئے درخواست کی۔ دیگر مسائل کے علاوہ نجی اداروں میں پڑھانے والے اساتذہ کو احساس پروگرام میں شامل کرنے اور نجی سکولوں کی مالی مدد کرنے کے لئے کہا گیا۔ اس بات پر زور دیا گیا کہ چار ہزار روپے سے کم فیس لینے والے اداروں کی اگر مالی مدد نہ کی گئی اور ان کو جلد نہ کھولا گیا تو 80 فیصد ادارے بند ہونے کا خدشہ ہے۔ اس کی وجہ سے 5 لاکھ سے زائد افراد بے روزگار ہو جائیں گے اور ان کے زیر کفالت 50 لاکھ افراد متاثر ہوں گے۔ یہ بہت بڑا سانحہ ہو گا۔ اب جبکہ ملک میں ہر قسم کی معاشی سرگرمیاں جاری ہیں تو سکولوں کو کھولنے میں پس و پیش نہیں ہونی چاہیے۔ آن لائن تعلیم کے حوالے سے کم فیس والے اداروں کے طلباء کے لئے ٹیبلٹ مہیا کرنے اور سستے سٹوڈنٹ انٹرنیٹ پیکیج کا مطالبہ کیا گیا۔ بجلی اور پانی کے بلوں کو کمرشل کرنے پر بھی تشویش کا اظہار کیا گیا اور وفاقی وزیر سے مطالبہ کیا گیا کہ اپنا اثر و رسوخ استعمال کر کے کم فیس والے نجی اداروں کی آواز بنیں اور ان کے مطالبات کو حکومتی ایوانوں تک پہنچائیں۔ وفاقی وزیر کے گوش گزار کیا گیا کہ کم فیس والے ادارے جو چار ہزار روپے سے کم فیس لے رہے ہیں ان کو ٹمپریچر گن، فیس ماسک، سینیٹائزرز، اور سپرے والی ادویات اگر فری مہیا نہیں کی جا سکتیں تو رعایتی قیمتوں پر مہیا کی جائیں۔فواد چویدری نے وفد کو یقین دلایا کہ کہ وہ نجی سکولوں کی تعلیم کے میدان میں کارکردگی اور رول سے پوری طرح آگاہ ہیں اور یقین دلایا کہ وہ ہر فورم پر ان کے لئے آوا اٹھائیں گے۔ نجی اداروں کے کھولنے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ 15 ستمبر کو ہر صورت اداروں کو کھولا جائے گا۔وفد میں راولپنڈی اور جہلم سے تعلق رکھنے والے اپسما کے نمائندگان ملک مشتاق، ڈاکٹر اشرف، سکینہ تاج، رومانہ عظمت، حسن جاوید اور دیگر نے شرکت کی۔ کامیاب میٹنگ کے انعقاد پر ممتاز ماہر تعلیم عرفان طالب نے ابرار احمد خان، ملک افتخار حسین اور وفد کے ارکان کو مبارک باد پیش کی اور اس یقین کا اظہار کیا کہ طلباء کے لئے فری ٹیبلٹ اور سستے سٹوڈنٹ انٹرنیٹ پیکیج سے آن لائن تعلیم سے متوسط اور نچلے طبقے کے افراد بھی مستفید ہو سکیں گے۔ اس طرح ''تعلیم سب کیلئے'' کا خواب شرمندہ تعبیر ہو سکے گ

مزید :

پشاورصفحہ آخر -