مسابقتی کمیشن کی تشکیل کیخلاف 11سال سے زیر التوا درخواستوں کا فیصلہ محفوظ

مسابقتی کمیشن کی تشکیل کیخلاف 11سال سے زیر التوا درخواستوں کا فیصلہ محفوظ

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے مسابقتی کمیشن کی تشکیل کے خلاف 11سال سے زیر التواء درخواستوں پر فریقین کے وکلاء کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا۔جسٹس عائشہ اے،جسٹس شاہد جمیل خان اور جسٹس ساجد محمود سیٹھی پرمشتمل فل بنچ نے کیس کی سماعت کی،لاہور ہائیکورٹ میں مسابقتی کمیشن کے خلاف پہلی درخواست 2009 ء میں دائر کی گئی تھی،گیارہ سال میں کیس کی سماعت کرنے والے 5 سنگل جج اور چار فل بنچ تبدیل ہوچکے ہیں،27 مئی 2009 ء کو جسٹس میاں ثاقب نثار نے لاہورہائی کورٹ کے جج کے طور پرایل پی جی ایسوسی ایشن کی درخواست پر حکم امتناعی جاری کیا تھا،سپریم کورٹ نے 25 جون 2009 ء کو مسابقتی کمیشن کی درخواست پر ہائیکورٹ کو جلد فیصلہ کرنے کی ہدایت کی،ایل پی جی، شوگر ملز، سیمنٹ ملز ودیگر ایسوسی ایشنز کی درخواستوں پر دو سو سے زائد مرتبہ سماعت ہوئی، اس کیس میں وفاقی حکومت کی جانب سے اٹارنی جنرل آف پاکستان بیرسٹر خالد جاوید جبکہ درخواست گزاروں کی جانب سے اعتزاز احسن،،سیلمان اکرم راجہ سمیت دیگر وکلاء نے دلائل دئیے۔

فیصلہ محفوظ

مزید :

صفحہ آخر -