دینی مدارس کے طلبا ء اسلام اور پاکستان کے اصل محافظ: سراج الحق

      دینی مدارس کے طلبا ء اسلام اور پاکستان کے اصل محافظ: سراج الحق

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے آیا صوفیہ کی بحالی پر ترک صدر طیب اردگان کو مبارک باد دی ہے اور کہا ہے کہ آیا صوفیہ کی مسجد کی بحالی سے دنیا بھر کے مسلمانوں کے اندر خوشی اور مسرت کی ایک لہر دوڑ گئی ہے۔امریکہ اور مغرب کی مسجد کی بحالی پرتنقید بلا جوازہے۔آیا صوفیہ پہلے بھی مسجد تھی جسے غیر قانونی طریقے سے میوزیم میں بدل دیا گیا تھا جس سے مسلمانوں کے دل زخمی تھے۔انہوں نے کہا کہ عالمی قوانین ہر مذہب کے ماننے والوں کو اپنی عبادت گاہوں کی حفاظت کاحق دیتے ہیں۔امریکہ اور مغرب کو فلسطین میں اسرائیلی مظالم،مسلمانوں کے قبلہ اول پر ناجائز قبضہ اور مساجد کی بے حرمتی کرتے ہوئے ان میں شراب خانے اور جوئے کے اڈے کھولنے کے خلاف آواز اٹھانی چاہئے۔ اسلام تمام مذاہب کے احترام کا درس دیتا ہے،عالمی برادری کو بھی اسلامی شعائر کا احترام کرنا چاہئے۔ دینی مدارس کے طلباء اسلام اور پاکستان کے اصل محافظ اور امت کی آئندہ آنے والی قیادت ہیں۔یہ ادارے عالمی استعماری قوتوں کی آنکھوں میں کھٹکتے ہیں اور بین الاقوامی سطح پر قرآن و سنت کے علوم کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے ان اداروں کے خلاف بلاجواز زہریلا پروپیگنڈا کیا جاتا ہے۔دہشت گردی کے نام پر دینی مدارس کو بدنام کرنے کی سازش اس لئے ناکام ہوئی کہ آج تک کسی دینی ادارے سے کوئی ایک دہشت گردنہیں پکڑا گیالیکن اس کے باوجود منفی پروپیگنڈا جاری ہے۔افسوس یہ ہے کہ حکومتوں نے مدارس اور دینی علوم کے طلباء کے حوالے سے اپنی ذمہ داری پوری نہیں کی۔کورونا وائرس سے دیگر اداروں کی طرح دینی مدارس کے اساتذہ اور طلباء بھی سخت متاثرہوئے لیکن متاثرین کیلئے اعلان کردہ امدادی پیکیج میں قرآن و سنت کی روشنی پھیلانے والے ان لاکھوں طلبا اور اساتذہ کی ایک روپے کی بھی امداد نہیں کی گئی اور حکومت نے ہمیشہ ان کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کیا ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسلام آباد کے سب سے بڑے دارالعلوم جامعہ فریدیہ کے امتحانی سینٹر کے دورہ کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔امتحانی سینٹر میں 15سو سے زائد طلباء امتحان دے رہے ہیں۔مدرسہ کے اساتذہ اور طلباء نے امیر جماعت اسلامی کے دورہ کے موقع پر ان کا شاندار استقبال کیا اور پاکستان میں نظام مصطفیﷺ کے نفاذکیلئے ان کی جدوجہد اور امت مسلمہ میں ان کے قائدانہ کردار کو سراہا۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ دینی مدارس اسلام کے قلعے اوردنیا میں پاکستان کے ایک نظریاتی اور اسلامی ملک ہونے کی پہچان ہیں۔ دینی مدارس میں اس وقت 35لاکھ طلبا و طالبات زیر تعلیم ہیں جن میں سے اکثریت ان حفاظ کرام کی ہے جو اللہ کی آخری کتاب قرآن پاک کو اپنے سینوں میں محفوظ کررہے ہیں مگر عالمی استعماری قوتوں کے غلام حکمرانوں کا ہمیشہ ان مدارس کے ساتھ سلوک معاندانہ رہا ہے۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -