سی پیک کے تحت توانائی کے 20منصوبے جاری، 13ہزار میگاواٹ بجلی پیدا ہو گی، سیکریٹری پاور ڈویژن

سی پیک کے تحت توانائی کے 20منصوبے جاری، 13ہزار میگاواٹ بجلی پیدا ہو گی، ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ (سی پیک) کی پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس چیئرمین شیر علی ارباب کی سربراہی میں پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوا اجلاس میں کمیٹی کے اراکین کے علاوہ سیکرٹری توانائی،سیکرٹری ریلوے سمیت دیگر حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں سیکرٹری توانائی نے کمیٹی کو سی پیک کے حوالے سے جاری بجلی کے منصو بو ں پر تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے بتایااسوقت سی پیک کے تحت بجلی پیدا کرنے کے 20منصوبے جاری ہیں اور ان منصوبوں سے 13ہزار میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی، اقتصادی راہداری کے تحت توانائی کے 14منصوبوں سے 10ہزار 414 جبکہ 7منصوبوں سے 6ہزار645میگا واٹ بجلی پیدا کی جائیگی۔ مٹیاری سے لاہور تک 878کلو میٹر طویل ٹرانسمشن لائن پر بھی کام جاری ہے اور یہ پاکستان کا پہلا منصوبہ ہے جو نجی شعبے کے تعاؤن سے جاری ہے۔ سی پیک کے زیر اہتمام کوئلہ سے بجلی پیدا کرنے کے 9منصوبے جاری ہیں جس سے مجموعی طور پر 8ہزار 820میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی۔ ان منصوبوں میں 4منصوبے برآمدی کوئلے جبکہ 5منصوبے مقامی سطح پر نکالے جانیوالے کوئلہ سے چلائے جائیں گے۔ کوئلے سے بجلی پیدا کرنے کے 4منصوبوں پر کام جاری ہے، اس میں ساہیوال کول پاؤر پراجیکٹ 27مہینوں کے مختصر مد ت میں تکمیل کو پہنچا اور ایک ورلڈ ریکارڈ ہے کیونکہ عالمی سطح پر کوئلے سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے کم از کم 3سال میں مکمل کئے جاتے ہیں۔ کمیٹی نے سی پیک کے زیر انتظام توانائی کے منصوبوں کی جلد تکمیل پر متعلقہ حکام کو خراج تحسین پیش کیا، اس موقع پر کمیٹی نے صوبہ خیبر پختونخوا اور سندھ کے سیکرٹریز کو ہدایت کی کہ وہ بجلی سے متعلق منصوبوں اور شکایات کو کمیٹی کے سامنے پیش کریں۔کمیٹی نے سیکرٹری توانائی کو سی پیک کے تحت چلنے والے بجلی کے منصوبوں کی ماہوار رپورٹ کمیٹی کو ارسال کرنے کی ہدایت کی۔ سیکرٹری ریلوے نے کمیٹی کو سی پیک کے تحت تعمیر کئے جانیوالے ایم ایل ون پراجیکٹ پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ سی ڈی ڈبلیو پی نے ایم ایل ون منصوبے کے پی سی ون جس کی لاگت7ارب20کروڑ ڈالر ہے ایکنک کو بھجوانے کی سفارش کی ہے جسے ایکنک کے آنیوالے اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ منصوبے کیلئے سرمایہ کاری کمیٹی تشکیل دی جا چکی ہے اور کمیٹی اس سلسلے میں 5میٹنگز منعقد کرچکی ہے۔یہ پاکستان ریلوے کی تاریخ کا سب سے بڑا منصوبہ ہے جس کیلئے بہترین کنسلٹنٹ کی تلاش جاری ہے۔ اس موقع پر چیئرمین کمیٹی نے کہایہ منصوبہ پاکستان ریلوے کی بہتری کیلئے سنگ میل ثابت ہوگا۔

مزید :

صفحہ اول -