کورونا کا خاتمہ نہ ہونا حکومت،عوام کی غفلت کا نتیجہ

کورونا کا خاتمہ نہ ہونا حکومت،عوام کی غفلت کا نتیجہ

  

آئر لینڈ کے کنسلٹنٹ اور ٹیلی میڈیسن کے ممتاز ہیلتھ پروفیشنل پروفیسر ڈاکٹر خرم شہزاد نے کہا ہے پاکستان میں ابھی کورونا وائرس ختم نہیں ہوا اور نہ ہی کوئی واضح کمی سامنے آئی ہے ہیلتھ پروفیشنلز کی کورونا کی فرنٹ لائن پر لڑتے ہوئے شہادت روکنے کا واحد طریقہ ٹیلی میڈیسن کا نفاذ ہے جو تاحال پاکستان میں حکمران نافذالعمل نہیں کر سکے، ایشو آف دا ڈے میں گفتگو کرتے ہوئے ڈاکٹر خرم شہزاد کا مزید کہناتھا دعوے سے کہتا ہوں حکمرانوں کے کوروناسے متعلق اعدادوشمار حقیقت کے مطابق نہیں۔ملک میں کورونا وائرس کے کیسز روز بروز بڑھ رہے ہیں اور شکار زیادہ تر غریب لوگوں کو علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کرنیوالے فرنٹ لائن فائٹرز ہیں،ان ڈاکٹر کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں کہ وہ بغیر سہولیات شب و رو ز مر یضوں کی زندگیاں بچانے میں محو اور جام شہادت نوش کر رہے ہیں۔ان فرنٹ لائن فائٹرز کو کورونا وائرس سے بچانے کا واحد حل ٹیلی میڈیسن نظام رائج کرنا ہے جس میں حکومت لیت و لعل سے کام لے رہی ہے۔کورونا کے ٹیسٹوں کی تعداد کم کر کے یہ تاثر دینا کہ مریضوں میں کمی آگئی ہے حقیقت نہیں۔ان دنوں پاکستان کے دورے پر ہوں آئر لینڈ میں فوری طور پر ٹیلی میڈیسن کا سسٹم متعارف کروایا گیا جس سے وہاں ڈاکٹر اور دیگر ہیلتھ پروفیشنلز کی زندگیاں سو فیصد محفوظ ہوئی مگر پاکستان کے اندر ایسے لگ رہا ہے جیسے ڈاکٹرز اور دیگر ہیلتھ پروفیشنلز کی زندگی کی کوئی قیمت نہیں۔ انہیں ڈبلیو ایچ او کے وضع کردہ قوانین اور ایس او پیز کے مطابق کٹس بھی فراہم کی جا ر ہیں اور نہ ہی دیگر سازوسامان تو پھرکورو نا کا وہی آسان شکار ہوں گے۔ پاکستان میں کورونا ختم نہیں ہوا جو عوام اور حکومت کی غفلت کا نتیجہ ہے۔

ڈاکٹر خرم شہزاد

مزید :

صفحہ اول -