وباء مکمل موجود، حکومتی اعداود شمار حقائق کی یکسرنفی

  وباء مکمل موجود، حکومتی اعداود شمار حقائق کی یکسرنفی

  

ملک کے ممتاز ہیلتھ پروفیشنل اور پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن لاہور کے صدر پروفیسر ڈاکٹر اشرف نظامی نے کہا ہے کہ ملک میں کورونا وائرس ختم ہوا ہے اور نہ ہی اس میں واضح کمی ہوئی ہے۔ مرکزی ہویا پنجاب کی حکومت وہ جو تاثر دے رہے ہیں کورونا ختم ہوچکا اور اس میں واضح کمی ہوچکی حقائق کے منافی ہے، حکمران عوام کو کورونا کے بارے میں اصل حقائق بیان نہیں کر رہے بلکہ چھپا رہے ہیں،ابھی کورو نا کے کیسز میں اضافہ ہو رہا ہے جو حکمرانوں کی غفلت، لاپرواہی اور کوتاہی کا نتیجہ ہے، وہ ایشو آف دا ڈے میں اظہار خیال کر رہے تھے۔پروفیسر ڈاکٹر اشرف نظامی نے مزید کہا کہ یہ کہاں کی حقیقت اور کہاں کا انصاف ہے کہ حکمران عوام سے جھوٹ بولیں،زمینی حقائق پر پردہ ڈالیں اور وہ پیسہ اور سرمایہ جو حکو مت کے پاس عوام کی امانت ہے اس کو عوام اور مریضوں پر خرچ نہ کریں۔ حکمرانوں نے نالائقی کا عملی ثبوت دیتے ہوئے کورونا وائرس کے ٹیسٹوں کی تعد اد میں پچاس فیصد سے زائد کمی کر دی ہے جس کا مقصد عوام کو یہ تاثر دینا ہے کہ ملک میں کورونا ختم ہو رہا ہے حالانکہ حقیقت اس کے مکمل طور پر برعکس ہے۔ ہمارے ڈاکٹرز کورونا کی فرنٹ لائن پر لڑتے ہو ئے جام شہادت نوش کر رہے ہیں،وائس چانسلر نشتر میڈیکل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مصطفی کمال پاشا جیسی ہستیوں کی شہادت اسکا واضح ثبوت ہے کہ ڈاکٹرز کو تحفظ فراہم کیا جا رہا اور نہ ہی ان کا مورال بلند کرنے کیلئے عملی اقدامات کیے جا رہے ہیں۔ اگر مرکز، پنجاب اور سندھ کے حکمرانوں کا یہی طرز عمل رہا تو مجھے نہیں لگتا آنیوالے کئی سالوں میں بھی پاکستان سے کورونا ختم ہو سکے، ورنہ معجزے سے ہی کورو نا ختم ہو سکتا ہے،انکاکہنا تھا کتنے افسوس کا مقام ہے کہ وزیراعظم اوروزیر صحت پنجاب کہتے ہیں عوام کو اپنی مدد آپ کے تحت کورونا میں جینے کا ڈھنگ سیکھنا ہوگا یہ نااہلی اور نالائقی نہیں تو اور کیا ہے، اگر آپ اپنے عوام کو تحفظ فراہم نہیں کر سکتے انہیں صحت تعلیم اور انصاف فراہم نہیں کر سکتے اور انکو سہولیات نہیں دے سکتے تو آپ کس چیز کے حکمران ہیں؟۔

ڈاکٹر اشرف نظامی

مزید :

صفحہ اول -