شیخوپورہ میں رکشہ ڈرائیور ز بھتہ وصولی کیخلاف سراپا احتجاج، وزیر اعظم سے نوٹس لینے کا مطالبہ 

شیخوپورہ میں رکشہ ڈرائیور ز بھتہ وصولی کیخلاف سراپا احتجاج، وزیر اعظم سے ...

  

شیخوپورہ(بیورورپورٹ)شیخوپورہ شہر اور اس کے گردونواح میں موٹر سائیکل رکشہ ڈرائیورز سے بھتہ وصول کرنیوالوں نے روزانہ ہزاروں روپے کی دیہاڑیاں لگانا شروع کر رکھی ہیں،اس بات کا انکشاف رکشہ ڈرائیوروں عباس وغیرنے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، رکشہ ڈرائیوروں نے بتایا کہ رواں سال کا باقاعدہ رکشہ فیس کا ٹھیکہ ٹی ایم اے نے فاروق ورک نامی ٹھیکیدار کو بولی میں دیا۔ ٹھیکیدار کے بندے شیڈول کے مطابق ہم سے 20روپے روزانہ لیتے تھے اور دوبارہ ہمیں پوچھا بھی نہیں کیا جاتا تھامگر اپنے لالچ کے تحت ٹی ایم اے کے بعض کلرکوں نے ٹھیکیدار فاروق ورک کو ورک آرڈر جاری نہ کیا تو مجبوراَ َٹھیکیدار کو یہ ٹھیکہ چھوڑنا پڑا،اور اس کے بعد ٹی ایم کے افسر اور کلرک بادشاہوں نے اپنے ملازمین کے ذریعے رکشہ ڈرائیوروں سے وصولی شروع کر دی، یہ عمل تو ٹھیک تھا مگر اپنے ملازمین کے ساتھ جب انہوں نے پرائیوئٹ غنڈوں کو چھوڑا تو انہوں نے اندھیر نگری مچاتے ہوئے ایک ایک روز میں تین تین مرتبہ پرچی فیس کی مد میں بھتہ وصول کرنا شروع کر دیا، پرچی فیس کی مد میں بھتہ نہ دینے والے رکشہ ڈرائیوروں کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنانا انہوں نے اپنا وطیرہ بنا لیا ہے۔مظلوم رکشہ ڈرائیوروں نے وزیر اعظم عمران خان، وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے داد رسی کا مطالبہ کیا ہے، جبکہ ٹی ایم اے شیخوپورہ کے افسران اور ملازمی کاکہنا ہے کہ رکشہ ڈرائیورز کے الزمات بے بنیاد ہیں 

رکشہ ڈرائیورز

مزید :

صفحہ آخر -